نوٹس / حل شدہ مشقی سوالات اُردو کلاس پنجم 5

اُردو کلاس پنجم

باب 1-حمد

                                                                                                                                                                                                                                                                                                                  حل مشقی سوالات                

کا نشان لگائیں۔Pسوالنمبر 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب پر                      
اللہ تعالیٰ کی بنائی ہوئی ہرچیز سے ظاہر ہے؟ 1.
عزت (د) پائیداری (ج) خوشنمائی (ب) عظمت (الف)
دن کو اللہ تعالیٰ نے عجیب چیز بخشی ہے؟ 2.
خوشبو (د) دولت (ج) صفائی (ب) روشنی (الف)
خوش نمائی ظاہر ہوتی ہے؟ 3.
پہاڑوں میں (د) مکانات میں (ج) انسان کی بنائی ہوئی چیزوں میں (ب) اللہ تعالیٰ کی بنائی ہوئی چیزوں (الف)
ایسی نظم جس میں اللہ تعالیٰ کی تعریف بیان کی گئی ہو اسے کہتے ہیں؟ 4.
قصیدہ (د) منقبت (ج) نعت (ب) حمد (الف)
ایک جیسی آواز والے الفاظ کی فہرست ہے؟ 5.
بہار، جاڑا (د) چھٹکی ، ٹھٹکی (ج) مہکے، بخشی (ب) بنائی ، ظاہر (الف)
مٹی سے خدا نے اگائے؟ 6.
باغ (د) صحرا (ج) بادل (ب) پہاڑ (الف)
کسی شخص، جگہ یا چیز کے نام کو کہتے ہیں؟ 7.
جملہ (د) حرف (ج) فعل (ب) اسم (الف)
“وہ پانچویں جماعت میں پڑھتا تھا” جملہ ہے؟ 8.
فعل ماضی کا (د) فعل امر کا (ج) فعل مستقبل کا (ب) فعل حال کا (الف)

جوابات: (1-ب)(2-ب)(3-الف)(4-الف)(5-ج)(6-د)(7-الف)(8-د)

س2۔اس حمد کو سامنے رکھتے ہوئے مندرجہ ذیل سوالوں کے جواب دیجئے۔

الف۔ حمد کسے کہتے ہیں؟

ج: ایسی نظم جس میں اللہ تعالیٰ کی تعریف بیان کی جائے اور اس کی نعمتوں کا ذکر کیا جائے  اسے حمد کہا جاتا ہے۔

ب۔ اس حمد کے شاعر کا نام لکھیں؟

ج: اس حمد کے شاعر کا نام اسماعیل میراٹھی ہے۔

ج۔ رات کو آسمان پر کیا چمکتے ہیں؟

ج: رات کو آسمان پر ستارے چمکتے ہیں۔

د۔ حمد میں شاعر نے کتنے موسمون کا ذکر کیا ہے؟ ان کے نام لکھیں۔

ج: شاعر نے اس حمد میں چار موسموں کا ذکر کیا ہے جو کہ درج ذیل ہیں۔

جاڑا (سردی)

گرمی

بہار

برسات

س3۔ حمد کے مطابق درست الفاظ لگا کر مصرعے مکمل کریں۔

1۔ اُس کی قدرت سے ۔۔۔۔۔ مہکے۔

2۔ تاروں بھری۔۔۔۔۔ کیا بنائی۔

3۔ کیا دودھ سی۔۔۔۔ ہے پھٹکی۔

4۔ ہررُت میں نیاسماں نئی۔۔۔۔۔

5۔ باغوں میں اُسی نے پھل۔۔۔۔۔

جوابات: (پھول)(رات)(چاندنی)(بات)(لگائے)

س4: مناسب الفاظ کی مدد سے خالی جگہ پر کیجیے۔

1۔ خدا کی بنائی ہوئی ہر چیز میں ۔۔۔۔۔۔

2۔ تاروں بھری۔۔۔۔۔۔۔ خوب صورت بنائی ہے۔

3۔ اللہ تعالیٰ نے دن کو عجب ۔۔۔۔۔۔ بخشی ہے۔

4۔ ہر رُت میں نیا۔۔۔۔۔۔ نئی بات ہے۔

5۔ بے شک خدا ہےقوی و۔۔۔۔۔۔

جوابات: (خوش نمائی)(رات)(صفائی)(سماں)(قادر)

س5۔درج ذیل الفاظ پر اعراب لگائیں۔

اعراب کے ساتھ الفاظ
خُدَا خدا
ظَاھِرْ ظاہر
قُدْرَتْ قدرت
عَجَبْ عجب
نِگاہ نگاہ
بَہَار بہار
نَادِرْ نادر

س6۔درج ذیل الفاظ کے متضاد (اُلٹ) الفاظ لکھیں۔

متضاد الفاظ
بدنمائی خوشنمائی
کانٹا پھول
خزاں بہار
دن رات
جاڑا گرمی
پرانا نیا

باب 2۔ نعت

                                                                                                                                                                                                                                                                                                                                           حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
                                                                                                                                                                                                                 آپﷺ نے باتیں بتائیں؟ 1.
زندگی کی (د) حق کی (ج) پیغمبروں کی (ب) لوگوں کی (الف)
آپﷺ کا مقام اونچا ہے؟ 2.
درختوں سے (د) پہاڑوں سے (ج) فلک سے (ب) میناروں سے (الف)
ہادی کا مطلب ہے؟ 3.
آواز دینے والا (د) دیکھنے والا (ج) سننے والا (ب) ہدایت دینے والا (الف)
آپ ﷺ کی خاطر دمک رہے ہیں؟ 4.
زمیں کے ذرے (د) سورج (ج) تارے (ب) جگنو (الف)
وہ دُعا جو مسلمان آنحضرتﷺ کا نام سن کر پڑھتے ہیں اسے کہتے ہیں؟ 5.
ماشاء اللہ (د) سبحان اللہ (ج) سلام (ب) درود (الف)
“پیارے اور ہمارے ” آپس میں ہیں؟ 6.
متضاد (د) مترادف (ج) ہم قافیہ (ب) ہم معنی (الف)
ایسی نظم جس میں حضرت محمدﷺ کی تعریف بیان کی جائے اسے کہا جاتا ہے؟ 7.
قصیدہ (د) نعت (ج) مسدس (ب) حمد (الف)
نبیوں میں سب سے بلند مقا م ہے؟ 8.
حضرت محمد ﷺ کا (د) حضرت موسیٰ علیہ السلام کا (ج) حضرت ابرہیم علیہ السلام کا (ب) حضرت آدم علیہ السلام کا (الف)
الفاظ کا ایسا مجموعہ جس سے بات کا پورا پورا مطلب سمجھ میں آجائے کہلاتا ہے؟ 9.
کلمہ (د) لفظ (ج) جملہ (ب) حرف (الف)
بے معنی لفظ کو کہا جاتا ہے؟ 10.
مشتق (د) مہمل (ج) اسم (ب) کلمہ (الف)

 

جوابات: (1-ج)(2-ب)(3-الف)(4-د)(5-الف) (6-ب)(7-ج)(8-د)(9-ب)(10-ج)

س2: اس نعت کے مطابق درج ذیل سوالوں کے جواب دیجیے۔

1۔ نعت کے شاعر کا نام لکھیں؟

ج: اس نعت کے شاعر کا نام صوفی غلام مصطفیٰ تبسم ہے۔

2۔ نعت کسے کہتے ہیں؟

ج: ایسی نظم جس میں نبی کریمﷺ کی تعریف بیان کی گئی ہو اسے نعت کہا جاتا ہے۔

3۔ “بلندنبیوں میں نام اُن ﷺ کا”سے کیا مراد ہے؟

ج:  اس کا مطلب یہ ہے کہ دُنیا میں کم وبیش ایک لاکھ چوبیس ہزار پیغمبر آئے مگر آپﷺ کا نام سب سے اونچا ہے۔

4۔ نعت میں کون کون سے دو مصرعے بار بار آئے ہیں۔ تحریر کیجیے۔

ج: اس نعت میں درج ذیل مصرعے بار بار آئے ہیں۔

نبی ﷺ ہمارے نبی ﷺ ہمارے                                                                               درود اُن ﷺ پر سلام اُن ﷺ پر

5۔ نعت میں شاعر نے حضورﷺ کے دم سے کن چیزون کے چمکنے کی بات کی ہے؟

ج: شاعر نے زمین کے ذروں اور فلک کے تاروں کے چمکنے کی بات کی ہے۔

س3۔ درست الفاظ لگا کر مصرعے مکمل کریں۔

1۔وہ حق کی باتیں۔۔۔۔والے۔

2۔ نبی ﷺ ہمارے۔۔۔۔۔ ہمارے۔

3۔ فلک سے اونچا ۔۔۔۔۔ اُن ﷺ کا ۔

4۔ ہمارے ہادی خُدا کے۔۔۔۔۔۔۔

5۔ اُنہی کی خاطر۔۔۔۔۔۔ رہے ہیں۔

جوابات: (بتانے)(نبی)(مقام)(پیارے)(دمک)

س4: مناسب الفاظ کی مدد سے خالی جگہ پر کیجیے۔

1۔ جس نظم میں حضرت محمد ﷺ کی تعریف کی جائے اسے ۔۔۔۔۔۔ کہتے ہیں۔

2۔ہمارے پیارے نبی ﷺ کا ۔۔۔۔۔ تمام نبیوں سے اُونچا ہے۔

3۔ ہمارے رسولﷺ ہمارے ۔۔۔۔۔ ہیں۔

4۔ ہمارے پیارے نبیﷺ ۔۔۔۔۔۔ کی باتیں بتانے والے ہیں۔

جوابات: (نعت)(مقام)(رہبر ورہنما)(حق)

س5: مندرجہ ذیل الفاظ کے مترادف (ہم معنی )الفاظ لکھیئے ۔

مترادف الفاظ
چمک دمک
مقام مرتبہ
آسمان فلک
اونچا بلند
رہنما رہبر

س6: لغت کی مدد سے مندرجہ ذیل الفاظ کے معنی لکھیں۔

معانی الفاظ
راستہ دکھانے والا رہنما
چمکنا دمکنا
سانس دم
سچ حق
ہدایت دینے والا ہادی
سبب، وجہ سے خاطر

س7: درج ذیل الفاظ کے متضاد لکھیں۔

متضاد الفاظ
نیچا اونچا
رہزن رہبر
آسمان زمین
الٹا سیدھا

 

باب                      3 – حجرِ اسود کی کہانی

حل مشقی سوالات

سوالنمبر 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
خانہ کعبہ کی تعمیر ہوئی؟ 1.
چھے ہزار سال پہلے (د) چار ہزار سال پہلے (ج) تین ہزار سال پہلے (ب) دو ہزار سال پہلے (الف)
حجرِ اسود لایا گیا؟ 2.
سمندر کی تہ سے (د) پہاڑوں سے (ج) آسمان سے (ب) جنت سے (الف)
خانہ کعبہ کی کچی دیواروں کو نقصان پہنچایا؟ 3.
سیلاب نے (د) دیمک نے (ج) بارشوں نے (ب) زلزلے نے (الف)
ہرقبیلے کا سردار چاہتا تھا کہ وہ ؟ 4.
ساری دولت پر قبضہ کر ے (د) حجرِاسود کو نصب کرے (ج) عرب کاسردار بنے (ب) سب قبیلوں کا سردار بنے (الف)
آخر کافیصلہ ہو ا کہ حجرِ اسود کو وہ شخص نصب کرے گا جو صبح سب سے پہلے؟ 5.
عبادت کرے (د) نظرآئے (ج) اٹھے (ب) خانہ کعبہ میں داخل ہو (الف)
مکہ کے لوگ آپ ﷺ کو پکارتے تھے؟ 6.
صادق اور امین (د) صدیق اور مامون (ج) صادق اور صدیق (ب) امین اور مامون (الف)
آپ ﷺ نے حجرِاسود رکھنے کےلئے منگوائی؟ 7.
ایک الماری (د) ایک کرسی (ج) ایک چادر (ب) ایک پلیٹ (الف)
کسی خاص شخص، جگہ یا چیز کے نام کو کہتے ہیں؟ 8.
اسم مشتق (د) اسم جامد (ج) اسم نکرہ (ب) اسم معرفہ (الف)

 

جوابات: (1-ج)(2-الف)(3-ب)(4-ج)(5-الف) (6-د)(7-ب)(8-الف)

س2: درج ذیل سوالات کے جواب دیجیے۔

1۔ خانہ کعبہ کب تعمیر ہوا؟

ج: خانہ کعبہ آج سے قریباْ چار ہزار سال پہلے تعمیر ہوا۔

2۔ خانہ کعبہ کس نے تعمیر ہوا؟

ج: خانہ کعبہ حضرت ابراہیم علیہ السلام اور ان کے فرزند حضرت اسمٰعیل علیہ السلام نے تعمیر کیا۔

3۔ حجرِ اسود کی تنصیب کے موقع پر کس بات کا خدشہ تھا؟

ج: حجرِ اسود ایک  مقدس پتھر ہے۔ ہر قبیلے کا سردار یہ چاہتاتھا کہ حجرِ اسود کی تنصیب کی سعادت اس کے حصے میں آئے اس لیے اس موقع پر قبیلوں کے درمیان جنگ ہو جانے کا خطرہ تھا۔

4۔ خانہ کعبہ کے صحن میں صبح سویرے کون پہنچا؟

ج: جب صبح سویرے لوگ خانہ کعبہ کی طرف آئے تو انہوں نے دیکھا کہ آنحضرتﷺ صبح سویرے خانہ کعبہ میں موجود ہیں۔

5۔ حجتہ الوداع کے موقع پر کتنے مسلمان آپﷺ کے ساتھ تھے؟

ج: حجتہ الوداع کے موقع پر ایک لاکھ مسلمان آپﷺ کے ساتھ تھے۔

س3:  مناسب الفاظ لگا کر خالی جگہ پر کیجیے۔

1۔ حضرت ابراہیم علیہ السلام اور حضرت اسماعیل علیہ السلام نے خانہ کعبہ کی ۔۔۔۔۔۔ کا کام کیا۔

2۔ ہر سال لاکھوں مسلمان حجرِ اسود کو ۔۔۔۔۔۔ دیتے ہیں۔

3۔ حجرِ اسود ہر قبیلے کےلئے ۔۔۔۔۔ تھا۔

4۔ آپﷺ نےہر قبیلے کا ایک ایک ۔۔۔۔۔ لیا۔

(تعمیر)(بوسہ)(قابلِ احترام)(نمائندہ)

س4: درج ذیل الفاظ کو جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
حج مکمل کرنے کےلیے خانہ کعبہ کا طواف ضروری ہے۔ طواف
سردی بڑی ہے گرم چادر اوڑھ لو۔ چادر
ہمارے گھر کا صحن بہت بڑا ہے۔ صحن
ہماری جماعت کےکمرے کی ہر دیوار چارٹون سے سجی ہے۔ دیوار
جنت ماں کے قدمون کے نیچے ہے۔ جنت

باب ۔4 خدمتِ خلق ۔ ایک عبادت

حل مشقی سوالات

سوالنمبر 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
حضرت عثمان رضی اللہ عنہ مسلمانوں کے خلیفہ تھے؟ 1.
چوتھے (د) تیسرے (ج) دوسرے (ب) پہلے (الف)
جب مسلمان ہجرت کرکےمدینہ منورہ  پہنچے تو وہاں شدید قلت تھی؟ 2.
دودھ کی (د) چاول کی (ج) پانی کی (ب) گندم کی (الف)
مدینہ میں میٹھے پانی کا ایک ہی کنوان تھا جس کا مالک تھا؟ 3.
ہندو (د) سکھ (ج) عیسائی (ب) یہودی (الف)
حضرت عثمان نے پہلی بار آدھا کنواں خریدا؟ 4.
بارہ ہزار درہم (د) دس ہزار درہم (ج) نو ہزار درہم (ب) آٹھ ہزار درہم (الف)
جس دن حضرت عثمان کی باری ہوتی لوگ پانی لے جاتے؟ 5.
دو ہفتے کےلئے (د) ایک ہفتے کےلئے (ج) دو دن کےلئے (ب) ایک دن کےلئے (الف)
جس دن یہودی کی باری ہوتی  لوگ پانی خریدتے ؟ 6.
بالکل نہ خریدتے (د) سستا (ج) کم (ب) زیادہ (الف)
یہودی نے باقی کا کنواں بھی حضرت عثمان کے ہاتھ بیچ دیا؟ 7.
دس ہزار درہم میں (د) آٹھ ہزار درہم میں (ج) چھے ہزار درہم میں (ب) پانچ ہزار درہم میں (الف)
بیر عربی زبان کالفظ ہے جس کے معنی ہیں؟ 8.
گہرا (د) پھل (ج) دشمنی (ب) کنواں (الف)
ایسا نام جو کسی خوبی کی وجہ سے مشہو رہوجائے اسے کہتے ہیں؟ 9.
کنیت (د) تخلص (ج) خطاب (ب) لقب (الف)
کسی کام کا کرنا ،ہونا یا سہنا زمانے کے لحاظ سے پایا جائے تو اسے کہتے ہیں؟ 10.
لفظ (د) حرف (ج) فعل (ب) اسم (الف)

 

جوابات: (1-ج)(2-ب)(3-الف)(4-د)(5-ب) (6-د)(7-ج)(8-الف)(9-الف)(10-ب)

س2:سبق کے مطابق درج ذیل سوالات کے مختصر جوابات دیں۔

1۔ اللہ تعالیٰ کن لوگوں کو پسند فرماتا ہے؟

ج: اللہ تعالیٰ ایسے لوگون کو پسند فرماتا ہے جو اللہ تعالیٰ کی مخلوق کی خدمت کریں۔

2۔ “بیرِ رومہ”کا کیا مطلب ہے؟

ج:  بیر عربی زبان میں کنویں کو کہتے ہیں اور یہ جس یہودی کی ملکیت تھا اس کا نام رومہ تھا۔ اس طرح بیرِ رومہ کا مطلب ہے رومہ کا کنواں۔

3۔ یہودی نے حضرت عثمان رضی اللہ عنہ  کو پورا کنواں کیوں فروخت کیا؟

ج:  حضرت عثمان رضی اللہ عنہ نےیہودی سے آدھا کنواں خریدا تھا یعنی کنواں ایک دن حضرت عثمان رضی اللہ عنہ کی ملکیت ہوتا اور ایک دن یہودی کی۔جس دن حضرت عثمان رضی اللہ عنہ کی باری ہوتی اس دن پانی مفت ہوتا۔ لوگ دو دن کی ضرورت کا پانی بھر کر لے جاتے اور جس دن یہودی کی باری ہوتی اس دن کوئی پانی خریدنے نہ آتا، اس لیے یہودی نے سارا کنواں حضرت عثمان رضی اللہ عنہ کے پاس فروخت کردیا۔

4۔ حضرت عثمان غنی رضی اللہ عنہ نے یہودی سے پورا کنواں کتنے میں خریدا ؟

ج: یہودی نے پہلے آدھا کنواں فروخت کرنے لئے بارہ ہزار درہم طلب کیےاور بعد میں باقی آدھا کنواں آٹھ ہزار درہم میں فروخت کردیا یوں حضرت عثمان رضی اللہ عنہ نے پورا کنواں بیس ہزار درہم میں خرید کر وقف کردیا۔

5۔ اس واقعہ سے ہمیں کیا سبق ملتا ہے؟

ج: اس واقعے سے ہمیں یہ سبق ملتا ہے کہ جو شخص رفاہِ عامہ کےلئے کوئی کام کرتا ہے اس کا ثواب اسے ہمیشہ ملتارہتا ہے۔ اللہ تعالیٰ اس سے خوش ہوتا ہے ۔ ہمیں چاہیے کہ ہم بھی دوسروں کے کام آئیں تاکہ اللہ تعالیٰ ہم سے خوش ہو۔

 س3۔ درج ذیل الفاظ کو جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
مسلمانوں نے پہلی ہجرت حبشہ کی طرف کی۔ ہجرت
دیکھتے ہی دیکھتے آسمان پر کالے بادل اُمنڈ آئے اُمنڈ آئے
آخر کار انصر کراچی جانے کےلئے رضامند ہوگیا۔ رضامند
ہمیں دنیاوی فائدے کی بجائے آخرت پر نظر رکھنی چاہیے۔ دنیاوی فائدے
دنیا آخرت کی کھیتی ہے۔ آخرت

س4۔ مندرجہ ذیل الفاظ کے معنی لغت سے تلاش کرکے خانوں میں لکھیں؟

معنی الفاظ
بدلہ ،صلہ معاوضہ
ہمیشہ رہنے والا صدقہ صدقہ جاریہ
فائدہ نفع
نقصان خسارہ
روز کی بات معمول
خوش خبری بشارت

س5۔ دی گئی مثال کے مطابق نیچے دیے گئے جملوں کی نشاندہی کیجئے کہ کون سا جملہ فعل ماضی سے، کون سا حال سے اور کون سا مستقبل سے تعلق رکھتا ہے۔

مثال: انہوں نے لوگوں کی مدد کی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فعل ماضی۔

ماضی/حال/مستقبل جملے
فعل ماضی مدینہ منورہ میں یہودی کا کنواں تھا۔
فعل ماضی یہودی مسلمانون کو مہنگے داموں پانی فروخت کرتا تھا۔
فعل مستقبل مجھے اس سے کہیں زیادہ کی پیش کش ہوگی۔
فعل مستقبل ایک روز یہودی کا حق ہوگا۔
فعل ماضی کنویں کو عام مسلمانوں کےلئے وقف کردیا۔
فعل ماضی رسول اللہ ﷺ نے خود بشارت دی تھی۔

س6۔ بچے سوچ کر لکھیں کہ حضرت عثمان رضی اللہ عنہ کا واقعہ پڑھ کر انہوں نے کیا سیکھا؟

ج: میں نے حضرت عثمان رضی اللہ عنہ کی سخاوت کا واقعہ بڑے غور سے پڑھاہے۔ میں نے اس سے یہ بات سیکھی ہے کہ جو کوئی اللہ کے لئے قربانی دیتا ہے اور لوگوں کی فلاح و بہبود کےلئے کام کرتا ہے اللہ تعالیٰ اس سے خوش ہوتا ہے۔ میں بھی اپنی ہمت کےمطابق دوسروں کے کام آنے کی کوشش کروں گا تاکہ میں اپنے اللہ کو راضی کرسکوں۔

باب ۔ 5 پاک وطن ہے پاکستان

حل مشقی سوالات

سوالنمبر 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
ہمارا پیار ا وطن جہان ہے؟ 1.
باغوں اور بہاروں کا (د) پھولوں اور کلیوں کا (ج) سمندروں اور پہاڑوںکا (ب) چاند اور تاروں کا (الف)
“پربت” کا مطلب ہے؟ 2.
ہموار جگہ (د) میدان (ج) پہاڑ (ب) سخت جگہ (الف)
ہم سب اپنے وطن کےہیں؟ 3.
رکھوالے (د) ساتھی (ج) بھائی (ب) دوست (الف)
ہم سب متوالے ہیں؟ 4.
پڑھائی کے (د) سیرو سیاحت کے (ج) خوشیوں کے (ب) آزادی کے (الف)

جوابات: (1-ج)(2-ب)(3-د)(4-الف)

س2۔ مندرجہ ذیل سوالوں کے مختصر جوابات دیں۔

1۔ شاعر نے پھولوں اور کلیوں کا جہان کسے کہا ہے؟

ج: شاعر نے اپنے وطن پاکستان کو پھولوں اور کلیوں کا جہان کہا ہے۔

2۔ نظم میں کون سا مصرع بار بار آیا ہے؟

ج: نظم میں یہ مصرع بار بار آیا ہے: پاک وطن ہے پاکستان

3۔ اس نظم میں “گلشن”سے کیا مراد ہے؟

ج: اس نظم میں گلشن سے مراد ہمارا پیارا وطن پاکستان ہے۔

4۔ امن اور آزادی کا نشان کسے کہا گیا ہے؟

ج: امن اور آزادی کا نشان پاکستان کے جھنڈے کو کہا گیاہے۔

5۔ پاکستانی پرچم میں کتنے رنگ ہیں؟

ج: پاکستانی پرچم میں در رنگ ہیں۔ ایک رنگ سبز ہے اور دوسرا سفید ہے۔ سبز رنگ زیادہ ہے جب کہ سفید رنگ کم ہے۔

س3: مناسب الفاظ کی مدد سے خالی جگہ پر کریں۔

1۔ اس گلشن کی فضائیں۔۔۔۔۔ ہیں۔

2۔ ہم سب اس سرزمین کے ۔۔۔۔۔ ہیں۔

3۔ پاک سرزمین پر ہماری ۔۔۔۔۔۔ بھی قربان ہے۔

4۔ ہمارا جھنڈا ہماری۔۔۔۔۔۔ کا نشان ہے۔

5۔ آزادی ہماری ۔۔۔۔۔۔ ہے۔

جوابات: (پاک)(رکھوالے)(جان)(آزادی)(شان)

س4۔اعراب کی مدد سے درج ذیل الفاظ کا تلفظ واضح کریں۔

اعراب کے ساتھ الفاظ
گُلْشَنْ گلشن
وَطَنْ وطن
ہِمّتْ ہمت
غَیْرَتْ غیرت
نِرَالاَ نرالا
مِٹِّیْ مٹی

س5۔ درج ذیل الفاظ کی جمع بنائیں۔

جمع واحد
کلیاں کلی
فضائیں فضا
جھنڈے جھنڈا
نشانات نشان
گھٹائیں گھٹا
رکھوالے رکھوالا

س6۔ ہم وزن الفاظ لکھیں۔

ہم وزن الفاظ الفاظ
میدان شان
آن جہان
والے رکھوالے
چمن امن
آبادی آزادی
دمن ثمن
پالے متوالے
مادی شادی

باب ۔6 مادرِ ملت محترمہ فاطمہ جناح ؒ

حل مشقی سوالات

سوالنمبر 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
فاطمہ جناح نے تعلیم حاصل کی؟ 1.
دانتوں کی معالج (د) فنی تعلیم (ج) استانی کی (ب) وکالت کی (الف)
فاطمہ جناح نے احمد دینٹل کالج میں داخلہ لیا؟ 2.
1922ء میں (د) 1921 ء میں (ج) 1919ء میں (ب) 1917ء میں (الف)
کراچی میں فاطمہ جناح نے ایک سکول کھولا؟ 3.
خاتون پاکستان کے نام سے (د) مادرِ ملت کے نام سے (ج) خاتون محترم کے نام سے (ب) خاتون اول کے نام سے (الف)
فاطمہ جناح غریب مریضوں کا علاج کرتی تھیں؟ 4.
شام کے وقت (د) سستا (ج) مفت میں (ب) کبھی کبھار (الف)
فاطمہ جناح نے بچوں کےنام ایک پیغام دیا؟ 5.
30 جون 1949ء کو (د) 28 جون 1949ء کو (ج) 26 جون 1949ءکو (ب) 25 جون 1949ء کو (الف)
ایسا نام جو پیا ریا حقارت کی وجہ سے بولا جائے اسے کہتے ہیں؟ 6.
کنیت (د) عرف (ج) تخلص (ب) لقب (الف)
ایسا اسم جس میں کسی ہتھیار کے معنی پائے جائیں اسے کہا جاتا ہے؟ 7.
اسم ِ آلہ (د) اسم مکبر (ج) اسم مصغر (ب) اسم ِ صوت (الف)

 

جوابات: (1-د)(2-ب)(3-د)(4-ب)(5-الف) (6-ج)(7-د)

س2: سبق کے مطابق سوالوں کے جواب لکھیں۔

1۔ محترمہ فاطمہ جناح کا قائداعظمؒ سے کیا رشتہ تھا؟

ج: محترمہ فاطمہ جناح قائداعظم ؒ کی چھوٹی بہن تھیں۔

2۔ محترمہ فاطمہ جناح کب پیدا ہوئیں؟

ج: فاطمہ جناح 31 جولائی 1893ء کو پیدا ہوئیں۔

3۔ محترمہ فاطمہ جناح کہاں پیدا ہوئیں؟

ج: محترمہ فاطمہ جناح کراچی میں پیدا ہوئیں۔

4۔ محترمہ فاطمہ جناح کو دیے گئے خطاب کا نام لکھیں؟

ج: محترمہ فاطمہ جناھ کو”مادرِ ملت” کا خطاب دیا گیا جس کا مطلب ہے قوم کی ماں۔

5۔ محترمہ فاطمہ جناح نے کتنے سال لندن میں گزارے؟

ج: محترمہ فاطمہ جناح نے پانچ سال لند ن میں گزارے۔

6۔ محترمہ فاطمہ جناح کا انتقال کب اور کہاں ہوا؟

ج: محترمہ فاطمہ جناح کا انتقال 9 جولائی 1976 کو کراچی میں ہوا۔

س3۔ سبق کے مطابق خالی جگہ پرکریں۔

1۔ محترمہ فاطمہ جناح نے اپنے بھائی کا ۔۔۔۔۔ پر ساتھ دیا۔

2۔ آزادی سب سے بڑی ۔۔۔۔۔ ہے۔

3۔ غریب مریضون کا علاج ۔۔۔۔۔ کرتی تھیں۔

4۔ محترمہ فاطمہ جناھ کو بچوں سے بہت ۔۔۔۔ تھا۔

5۔ وقت کی ۔۔۔۔۔ کرو۔

جوابات: (1-قدم قدم)(2-نعمت)(3-مفت)(4-پیار)(5۔قدر)

س4۔ دیے گئے الفاظ کو اپنے جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
تعلیم حاصل کرنا مردو عورت دونوں کےلئے ضروری ہے۔ تعلیم
آزادی بہت بڑی نعمت ہے۔ آزادی
بھلائی کے کاموں بڑھ چڑھ کر حصہ لینا چاہیے۔ بھلائی
پاکستانی ایک متحدقوم ہیں۔ قوم
ہونہار بچے ملک و قوم کا سرمایہ ہوتے ہیں۔ سرمایہ

س5: درج ذیل الفاظ کے معنی لغت سے تلاش کرکے لکھیے۔

معانی الفاظ
پیارا،اچھا عزیز
رکنا، ٹھہرنا، قائم کرنا قیام
فرماں برداری اطاعت
پہلی ، اولین ابتدائی
طریقہ شعار
نیکی، اچھائی بھلائی

س6۔مثال کے مطابق نئے لفظ بنائیں جیسے ۔ ذکر سے ذاکر۔

نئے الفاظ الفاظ
نظر فخر
شعر شُکر
ناظر فاخر
شاعر شاکر

س8۔بچے سوچ کر بتائیں کہ دونوں بہن بھائی نے ایک دوسرے کا ساتھ کیسے دیا؟

ج: قائداعظم ؒ اور فاطمہ جناح مثالی بہن بھائی تھے۔ قائداعظمؒ نے فاطمہ جناح کی پڑھائی میں ان کی بھرپور مدد کی جس کے نتیجے میں فاطمہ جناح دانتوں کی معالج بن گئیں۔ فاطمہ جناح بھی بھائی کا ساتھ دینے میں پیچھے نہ رہیں انہوں نے ہر قدم پر قائداعظمؒ کا ساتھ دیا یہاں تک کہ جب قائداعظم ؒ پانچ سال لندن میں رہے تو فاطمہ جناح بھی ان کے ساتھ لندن میں رہیں۔

باب ۔7 لاہور کی بادشاہی مسجد

حل مشقی سوالات

س 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
لاہور کی بادشاہی مسجد مکمل ہوئی؟ 1.
1673ء میں (د) 1672ء میں (ج) 1671ء میں (ب) 1670ء میں (الف)
بادشاہی مسجد کے مرکزی دروازے کے سامنے موجود ہے؟ 2.
حضوری باغ (د) شاہی قلعہ (ج) مینارِ پاکستان (ب) علامہ اقبال ؒ کا مزار (الف)
بادشاہی مسجد میں نمازیوں کی گنجائش ہے؟ 3.
ایک لاکھ ساٹھ ہزار (د) ڈیڑھ لاکھ (ج) ایک لاکھ (ب) بچاس ہزار (الف)
مسجد میں لوگوں کی خاص توجہ کا مرکز ہے؟ 4.
سنہری قرآن مجید (د) مسجد کا احاطہ (ج) مسجد کے مینار (ب) مسجد کا تالاب (الف)
موذن کی آواز سنائی دیتی ہے؟ 5.
ہرحصے میں (د) شمالی حصے میں (ج) مغربی حصے میں (ب) مشرقی حصے میں (الف)
بادشاہی مسجد کو عالمی ورثہ قرار دیا ہے؟ 6.
عوام نے (د) یونیسکو نے (ج) حکمرانوں نے (ب) سیاحوں نے (الف)

 

جوابات: (1-د)(2-ج)(3-ب)(4-د)(5-د) (6-ج)

س2: مندرجہ ذیل سوالات کے جواب دیں۔

1۔ بادشاہی مسجد کس مغل بادشاہ نے تعمیر کروائی؟

ج: بادشاہی مسجد اورنگ زیب عالمگیر نے تعمیر کروائی۔

2۔ بادشاہی مسجد کے نزدیک واقع کوئی سی دو مشہور تاریخی عمارتوں کے نام تحریر کریں؟

ج: بادشاہی مسجد کے مرکزی دروازے کے سامنے ہی تاریخی شاہی قلعہ ہے اور بادشاہی مسجد اور شاہی قلعے کے درمیان ایک تاریخی باغ ہے جسے حضوری باغ کہا جاتا ہے۔

3۔ بادشاہی مسجد اور شاہی قلعہ کے درمیان موجود باغ کا کیا نام ہے؟

ج: اس باغ کا نام حضوری باغ ہے۔

4۔ بادشاہی مسجد کی اندرونی دیوارین کس طرح کی ہیں؟

ج: بادشاہی مسجد کی اندرونی دیواروں کی بناوٹ ایسی ہے کہ مؤذن کی آواز بغیر لاؤڈ اسپیکر کے بآسانی مسجد کے ہر حصے میں سنائی دیتی ہے۔

5۔ مسجد کے صحن میں وضو کےلئے بنائے گئے تالاب میں کیا خاص بات ہے؟

ج: اس تالاب کی خاص بات یہ ہے کہ اس کے اردگرد سفید پتھر لگایا گیا ہے جو انتہائی گرمی میں بھی ٹھنڈا رہتا ہے۔

س3۔سبق کے حوالے سے درست تلفظ منتخب کرکے خالی جگہیں پر کریں۔

1۔ بادشاہی مسجد لاہور شہر کے۔۔۔۔۔ میں واقع ہے۔

2۔ مسجد کی عمارت میں زیادہ تر۔۔۔۔۔۔ کا پتھر استعمال ہوا ہے۔

3۔اس کا صحن بہت کشادہ ہے جس میں۔۔۔۔۔ سے زائد نمازیوں کی گنجائش ہے۔

4۔ بادشاہی مسجد کا شمار دنیا کی بہترین ۔۔۔۔۔۔۔ میں ہوتا ہے۔

5۔ سنہری حروف سے مزین۔۔۔۔۔۔ لوگوں کی توجہ کا خاص مرکز ہے۔

جوابات: (1-وسط)(2-سرخ رنگ)(3-ایک لاکھ)(4-تاریخی عمارتوں)(5-قرآن مجید)

س4۔درج ذیل الفاظ کے معنی لغت سے تلاش کیجئے۔

معنی الفاظ
مہیاہونا دستیاب
کسی کے ساتھ متعلق ہونا منسوب
خامی نقص
درمیان وسط
تالاب حوض
اچھادکھائی دینا خوش نما

س5۔ قواعد اور زبان شناسی کے اُصولوں کی روشنی میں غلط فقرات کو درست کر کےلکھیے۔

درست فقرات غلط فقرات
دراصل وہ سچا ہے۔ دراصل میں وہ سچا ہے۔
آبِ زم زم متبرک ہے۔ آبِ زم زم کا پانی متبر ک ہے۔
کوہ ِ ہمالیہ بہت اونچا ہے۔ کوہِ ہمالیہ کا پہاڑ بہت اونچا ہے۔
وہ ہر روز سیر کو جاتا ہے۔ وہ ہردن  سیر کو جاتا ہے۔
یہ دہی بہت کھٹا ہے۔ یہ دہی بہت کھٹی ہے۔

س6۔ درج ذیل الفاط پر اعراب لگائیں۔

اعراب والے الفاظ الفاظ
مَخْصُوْص مخصوص
رُوْح پَرْوَر روح پرور
اِجْتَمَاعْ اجتماع
حَوْضْ حوض
شُہْرَتْ شہرت

باب۔8 دیکھو ناچ رہا ہے مور

حل مشقی سوالات

س 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
رُت آئی ہے؟ 1.
ساون بھادوں کی (د) جاڑے کی (ج) بیساکھ کی (ب) خزاں کی (الف)
دھرتی پر چھائی ہے؟ 2.
سستی (د) خزاں (ج) بہار (ب) ہریالی (الف)
دیکھو جنگل میں ناچ رہا ہے؟ 3.
چکور (د) مور (ج) بٹیر (ب) تیتر (الف)
چھائی ہے گھٹا گھنگھور؟ 4.
سفید (د) سرمئی (ج) کالی (ب) نیلی (الف)
ایسے الفاظ جن کی آواز ایک جیسی ہوانہیں کہا جاتا ہے؟ 5.
متضاد الفاظ (د) مترادف الفاظ (ج) ہم قافیہ (ب) ہم ردیف (الف)
مور کے ایک ایک پر میں لگا ہے؟ 6.
باغ (د) پھل (ج) پھول (ب) رنگ (الف)

 

جوابات: (1-د)(2-الف)(3-ج)(4-ب)(5-ب) (6-د)

س۔2 مندرجہ ذیل سوالوں کے مختصر جوابات لکھیں؟

1۔ اس نظم کے شاعر کا پورا نام لکھیں؟

ج: اس نظم کے شاعر کا پورا نام ابوالاثر حفیظ جالندھری ہے۔

2۔ ساون بھادوں کی رُت کسے کہتے ہیں؟

ج: ساون بھادوں دو دیسی مہینے ہیں جن میں بارشیں بہت زیادہ ہوتی ہیں۔ برسات کے موسم کو ساون بھادوں کی رُت کہتے ہیں۔

3۔ پھولوں اور پھلوں کے گہنے کس نے پہن رکھے ہیں؟

ج: پھولوں اور پھلوں کے گہنے باغوں نے پہن رکھے ہیں۔

4۔ آم کے درخت کے نیچے کون مست کھڑا ہے؟

ج:آم کے درخت کے نیچے مور مست کھڑا ہے۔

5۔شاعر آخری شعر میں کس سے مخاطب ہے؟

ج: شاعر آخری شعر میں بھائی سے مخاطب ہو کر کہہ رہا ہے کہ شور نہ مچاؤ کیوں کہ مور ناچ رہا ہے۔

س3: مصرعے مکمل کریں۔

1۔ دھرتی پر۔۔۔۔۔ چھائی۔

2۔ کوئل کوکی ،چڑیاں۔۔۔۔۔۔

3۔ دیکھو ناچ رہا ہے۔۔۔۔۔۔

4۔ گلشن میں ۔۔۔۔۔۔ کھلایا۔

5۔ دیکھنا ہم کو۔۔۔۔۔ نہ پائے۔

جوابات: (1-ہریالی)(2-چہکیں)(3-مور)(4-گل زار)(5-دیکھ)

س4۔واحد الفاظ کے جمع اور جمع کے واحد لکھیں۔

واحد جمع جمع واحد
گہنا گہنے رتیں رت
کلی کلیاں کونپلیں کونپل
چڑیا چڑیاں پیڑوں پیڑ

)کانشان لگائیے۔Pس5۔درست جواب پر (

1۔ جنگل میں ناچا۔                                                          مور /چکور۔

2۔ ساون بھادوں کی رت ہے۔                                                          برسات/بہار۔

3۔ کوئل کرتی ہے۔                                                                      چوں چوں/کوکو۔

4۔ پھولوں اور پھلون کے گہنے پہنے۔                                   صحراؤں نے /باغوں نے۔

5۔ مور کے پرہوتے ہیں۔                                                         بے رنگ/رنگ برنگے ۔

جوابات: (1-مور)(2-بہار)(3-کوکو)(4-باغوں نے)(5-رنگ برنگے)

س6۔ مندرجہ ذیل الفاظ کے مترادف (ہم معنی) الفاظ لکھیں۔

مترادف الفاظ
سبزہ ہریالی
باغ گلشن
عمدہ، اچھا خوب
موسم رُت
درخت پیڑ
سیاہ کالی

س7۔ مندرجہ ذیل الفاظ کے معانی لغت سے تلاش کر کےلکھیں۔

معنی الفاظ
زیورات گہنے
ایک قسم کا باجا طنبور
چمن ، باغ گل زار
مور کا پروں کوپھیلانا چنور
رنگ برنگے رنگ رنگیلے

باب ۔9 میجر محمد طفیل شہید

حل مشقی سوالات

سوالنمبر 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
میجر محمد طفیل پیدا ہوئے؟ 1.
1918ء میں (د) 1916ء میں (ج) 1914ء میں (ب) 1912ء میں (الف)
بھارت نے لکشمی پور پر قبضہ کرلیا؟ 2.
1958ء میں (د) 1951ء میں (ج) 1948ء میں (ب) 1948ء میں (الف)
میجر محمد طفیل نے ہزارون فوجیوں کا مقابلہ کرنے کے لئے انتخاب کیا؟ 3.
575 جونواں کا (د) 175 جوانوں کا (ج) 75 جوانوں کا (ب) 50  جوانوں کا (الف)
میجر محمد طفیل نے اپنا نائب مقرر کیا؟ 4.
محمد ناظم کو (د) محمد معظم کو (ج) محمد عظیم کو (ب) محمد اعظم کو (الف)
حملے کےلئے وقت مقررہوا؟ 5.
صبح چھے بجے کا (د) صبح چار بجے کا (ج) صبح تین بجے کا (ب) رات دو بجے کا (الف)
افسران کی آمد پر میجر طفیل نے کہا: میں اپنا فرض اداکرچکا ہوں دشمن: 6.
بھاگ چکا ہے (د) معافی مانگ چکا ہے (ج) مرچکا ہے (ب) چھپ چکا ہے (الف)
میجر محمد طفیل کو اعزاز دیا گیا؟ 7.
ہلالِ جرات (د) تمغہ امتیاز (ج) ستارہ جرات (ب) نشانِ حیدر (الف)

جوابات: (1-ب)(2-د)(3-ب)(4-الف)(5-ج) (6-د)(7-الف)

س2۔ سبق کے مطابق مندرجہ ذیل سوالات کے جواب دیں۔

1۔ میجر محمد طفیل کب اور کہاں پیدا ہوئے؟

ج: میجر محمد طفیل 1914ء میں مشرقی پنجاب کے علاقے ہوشیارپور میں پیدا ہوئے۔

2۔ بھارتی فوجیون کا مقابلہ کرنے کےلئے میجر محمد طفیل نے کتنے جوانوں کا انتخاب کیا؟

ج: بھارتی فوجیون کی تعداد بہت زیادہ تھی لیکن ان کا مقابلہ کرنے کے لئے میجر محمد طفیل نے صرف 75 جوانون کا انتخاب کیا۔

3۔ دشمن پر حملے کےلئے میجر محمد طفیل نے کیا حکمت عملی اختیار کی؟

ج:میجر محمد طفیل نے دشمن پر حملے کے لئے فوجی جوانوں کو تین دستوں میں تقسیم کیا ۔ انہوں نے اپنے ماتحت محمد اعظم کو نائب بنایا اور دو دستے ان کی نگرانی میں دے دیے جنہوں نے دو اطراف سے حملہ کرنا تھا۔ تیسرا دستہ میجر محمد طفیل کی قیادت میں تھا۔ جس نے لمبا چکر کاٹ کر ٹیلے کے پیچھے سے حملہ کرناتھا۔

4۔ پاک فوج کے اعلیٰ افسران کی آمد پر میجر محمد طفیل نے کیا کہا؟

ج:جب پاک فوج کے اعلیٰ افسران پہنچے تو میجر محمد طفیل نے انہیں سلیوٹ کیااور کہا: “جناب! میں اپنا فرض اداکرچکاہوں، دشمن بھاگ چکا ہے۔

5۔ ڈاکٹروں نے کس بات پر حیرت کا اظہار کیا؟

ج:ڈاکٹروں نے اس بات پر حیرت کا اظہار کیا کہ تین گولیاں لگنے کے باوجود میجر محمد طفیل نہ صرف یہ کہ پانچ گھنٹے زندہ رہے بلکہ لڑتے بھی رہے۔

6۔ میجر محمد طفیل کو کون سا اعزاز ملا؟

ج: میجر محمد طفیل کو بہادری کے صلے میں پاکستان کا سب سے بڑا فوجی اعزاز نشان حید رملا۔

س3۔ نیچے دیے گئے الفاظ کو اپنے جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
میجر محمد طفیل نے بہادری کا بے مثال کارنامہ سرانجام دیا۔ بےمثال
ہماری فوج بہت ہی جرات مند ہے۔ جرات مند
میجر محمد طفیل نے دو دستے اپنے نائب کی نگرانی میں دے دیے۔ نگرانی
زخمی ہونے کے باوجود میجر طفیل اپنے جوانوں کا حوصلہ بڑھاتے رہے۔ حوصلہ بڑھانا
پاکستان کابچہ بچہ ملک پر جان نثاری کےلئے تیار ہے۔ جان نثاری

س3۔ غلط جملوں کو درست کر کے دوبارہ لکھیں۔

درست فقرات غلط فقرات
انہوں نے وطن ِ عزیز کی حفاظت کی۔ اس نے وطنِ عزیز کی حفاظت کی۔
علاقہ آزاد کروالیا۔ علاقہ آزاد کروالی۔
اونچے ٹیلے پر فوج موجود تھی۔ اونچی ٹیلے پر فوج موجود تھی۔
فوجی کو اعزاز ملا۔ فوجی کو اعزاز ملی۔
شہادت کا درجہ حاصل کیا۔ شہادت کی درجہ حاصل کی۔

س5۔ درج ذیل الفاظ کے متضاد الفاظ تحریر کریں۔

متضاد الفاظ
دور نزدیک
                                                          گھٹانا بڑھانا
خام پختہ
بزدل بہادر
اُجالا اندھیرا
پست بلند

س6۔کہانی لکھنے کا طریقہ بیان کریں۔

ج: کہانی لکھنا۔ کوئی قصہ یا واقعہ بیان کرنا کہانی کہلاتا ہے۔ یہ واقعہ حقیقی بھی ہو سکتا ہے اور فرضی بھی۔ کہا نی میں واقعہ ترتیب وار بیان کیا جاتا ہے۔ کہانی ایک یا ایک سے زائد کرداروں پر مشتمل ہوتی ہے۔ہر کہانی کا عنوان اس کے موضوع کے مطابق ہوتا ہے۔

کہانی کے آغاز میں تجسس اور اختتام میں کوئی نتیجہ پایا جاتا ہے۔ درج ذیل عنوانات میں سے اپنی پسند کے کسی ایک عنوان پر کہانی تحریر کریں۔

الف۔ سچ کی جیت

ب۔ محنت میں عظمت ہے

ج۔ اتفاق میں برکت؎

سچ کی جیت:۔  حضرت عبدالقادر جیلانیؒ بہت بڑے ولی اللہ اور بزرگ ہو گزرے ہیں۔ انہیں علم حاصل کرنے کا بہت شوق تھا۔ لیکن اس زمانے میں علم حاصل کرنے کےلئے دور دراز کا سفر طے کرنا پڑتا تھا اور سفر کے راستے بھی محفوظ نہیں تھے۔

آپ اپنی والدہ کے ساتھ بغداد سے بہت دور ایک گاؤں میں رہتے تھے۔ اتفاق سے ایک قافلہ بغداد کی طرف جا رہا تھا ۔آپ بھی اس قافلے میں شامل ہوگئے۔ آپ کی والدہ نے آپ کو چالیس اشرفیاں دیں اور گھر سے رخصت ہوتے وقت نصیحت کی کہ “بیٹا! ہمیشہ سچ بولنا ۔” قافلہ ایک گھنے جنگل سے گزر رہا تھا۔ اس جنگل میں ڈاکو رہتے تھے جو قافلوں کو لوٹ لیتے تھے۔ اس قافلے پر بھی ڈاکوؤں نے حملہ کیا اور قافلے کو لوٹنے لگے۔ ایک ڈاکو آپ کے پاس آیا اور اس نے پوچھا۔ “لڑکے!بتاتیرے پاس کیا ہے؟ ” آپ نے جواب دیا۔ آپ نے جواب دیا “میرے پاس چالیس اشرفیاں  ہیں۔” ڈاکو نے اسے مذاق سمجھا اور آگے نکل گیا۔ اس کے بعد ایک اور ڈاکو نے بھی آپ سے وہی سوال کیا اور آپ نے پھر وہی جواب دیا۔ اس پر وہ ڈاکو انہیں پکڑ کر اپنے سردار کے پاس لے گیااور اس کے سامنے سارا واقعہ بیان کیا۔ سردار نے آپ سے پوچھا”لڑکے ! کیا واقعی تیرے پاس چالیس اشرفیاں ہیں؟” آپ نے بتایا کہ “وہ میری قمیض کے اندر سلی ہوئی ہیں”۔ چنانچہ جب قمیض کی تہہ کو کھولا گیا تو چالیس اشرفیاں زمین پر گر پڑیں۔ یہ دیکھ کر سردار حیران رہ گیا۔ سردار نے پوچھا۔ “تم نے سچ بول کر اپنا راز کیوں بتایا؟” اس پر آپ نے جواب دیا کہ “میری ماں نے مجھے نصیحت کی تھی کہ ہمیشہ سچ بولنا۔”

اس بات کا سردار کے دل پر گہرا اثر ہوا۔ اس نے سوچا کہ یہ لڑکا اپنی ماں کاکس قدر فرمانبردار ہے اور ہم اللہ کے کس قدر نافرمان ہیں۔ یہ سوچ کر اس نے اپنے ساتھیوں سمیت ڈاکے ڈالنے سے توبہ کرلی۔ لوگوں کا مال واپس کردیا اور نیکی کا راستہ اخیتار کر لیا۔

س7۔ بچے سوچ کر بتائیں کہ وہ یہ واقعہ پڑھنے کے بعد کیا محسوس کررہے ہیں؟

ج: میں نے میجر محمد طفیل کا واقعہ بڑے غور سے پڑھا ہےاور میں محسوس کررہا ہوں ہمارے پیارے وطن کو ایسے ہی بہادر اور بےلوث لوگوں ضرورت ہے ۔میں بھی بڑاے ہو کر ملک کے لئے ایسا ہی کوئی کارنامہ انجام دینے کے بارے میں سوچ رہا ہوں جس سے میرے ملک کا نام روشن ہو۔

باب ۔10 بھائی کے نام خط

حل مشقی سوالات

سوالنمبر 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
بھائی کے نام خط لکھا گیا؟ 1.
پشاور سے (د) کوئٹہ سے (ج) کراچی سے (ب) لاہور سے (الف)
محمد علی نے احسن سے پوچھا تھا؟ 2.
غیرنصابی سرگرمیوں کے متعلق (د) امتحانات کے متعلق (ج) کمپیوٹر لیب کے متعلق (ب) لائبریری کے متعلق (الف)
کمپیوٹر کی روح کہا جاتا ہے؟ 3.
انٹرنیٹ کو (د) مانیٹر کو (ج) ماؤس کو (ب) کی بورڈ کو (الف)
اب کمپیوٹر کا کام لیا جانے لگا ہے؟ 4.
ریڈیو سے (د) موبائل فون سے (ج) ٹیلی ویژن سے (ب) ٹیلی فون سے (الف)
اُمید ہے کہ میرا یہ خط آپ کو مل جائے گا؟ 5.
دو تین دن میں (د) آج ہی (ج) شام کے وقت (ب) صبح سویرے (الف)
سنٹرل پروسیسنگ یونٹ کو مختصر طور پر لکھا جاتا ہے؟ 6.
یو۔سی ۔پی (د) سی۔پی۔یو (ج) یو۔پی ۔سی (ب) پی۔سی۔یو (الف)
میرا خط ملنے پر آپ مجھے اطلاع دیں؟ 7.
فون پر (د) خط کے ذریعے (ج) ای میل کے ذریعے (ب) خود آکر (الف)
کمپیوٹر کو کنٹرول کرتا ہے؟ 8.
ماؤس (د) کی بورڈ (ج) مانیٹر (ب) سی پی یو (الف)

 

جوابات: (1-الف)(2-ب)(3-د)(4-ج)(5-د) (6-ج)(7-ب)(8-الف)

س2۔ درج ذیل سوالوں کے جواب دیں ۔

1۔ احسن کس شہر میں رہتا ہے؟

ج: احسن لاہور میں رہتا ہے۔

2۔ کمپیوٹر لیب میں کتنے کمپیوٹر ہیں؟

ج: کمپیوٹر لیب میں بہت سے کمپیوٹر ہیں۔

3۔ کمپیوٹر کی سکرین کو کیا کہتے ہیں؟

ج: کمپیوٹر کی سکرین کو مانیٹر کہا جاتا ہے۔

4۔ کمپیوٹر کا دماغ کسے کہا جاتا ہے؟

ج: سی پی یو بغیر سنٹرل پروسیسنگ یونٹ کو کمپیوٹر کا دماغ کہا جاتا ہے۔

5۔ احسن نے خط کس کے نام لکھا؟

ج: احسن نے اپنے بھائی محمد علی کے نام خط لکھا ۔

س3۔ سبق کے مطابق خالی جگہ پر کریں۔

1۔ میں یہاں ۔۔۔۔ میں خیریت سے ہوں۔

2۔ لیب میں ۔۔۔۔ کی سہولت بھی ہے۔

3۔ انٹر نیٹ کو کمپیوٹر کی ۔۔۔۔۔۔ کہا جاتا ہے۔

4۔ ہر بچہ ایک ۔۔۔۔۔ کمپیوٹر استعمال کرتا ہے۔

5۔ ای میل کے ذریعے ہم ایک جگہ سے دوسری جگہ ۔۔۔۔ ۔چند سیکنڈ میں بھیج سکتے ہیں۔

جوابات: (1-ہاسٹل)(2-انٹرنیٹ )(3-روح)(4-گھنٹہ)(5-پیغام)

س4۔ درج ذیل الفاظ کو جملوں میں استعما ل کریں۔

جملے الفاظ
ہمارے ملک کے حالات بہت بہتر ہیں۔ حالات
اسلم اکیلا اسکول جاتا ہے۔ اکیلا
علم حاصل کرنے میں فائدہ ہی فائدہ ہے۔ فائدہ
ماں باپ کا ہر حکم ماننا چاہیے۔ حکم
کتاب کا صفحہ مت موڑو صفحہ

س5۔ اس سبق میں دو الفاظ تقریباٌ اور احتیاطاٌ تنوین (یعنی دوزبر) کے ساتھ استعمال ہوئے ہیں۔ آپ درج ذیل الفاظ میں تنوین استعمال کیجیے اور نئے الفاظ بنائیے۔

تنوین کے ساتھ الفاظ
فطرتاٌ فطرت
غالباْ غالب
عادتاٌ عادت
شرعاٌ شرع

س6۔ وہ الفاظ جو کسی کو محاطب کرنےکےلئے استعمال ہوں”حروفِ ندا” کہلاتے ہیں۔مثلاٌ : لوگو! ،مسلمانو!،ارے بھائی!، دوستو!،بچو!

ان حروف کے سامنے لگائی گئی علامت (!) کو ندائیہ کہتے ہیں۔ آپ درج ذیل جملوں میں حروفِ ندا کے سامنے ندائیہ کی علامت (!) لگائیے۔

ج:

الف۔ دوستو! آؤ سیر کو چلیں۔

ب۔ بچو!بھاگو بارش آگئی۔

ج۔ ارےبھائی!میر ی بات سنو۔

د۔ لوگو!میری بات سنو۔

ہ۔ مسلمانو!ایک ہوجاؤ۔

س7۔ ایسا کلمہ جس میں کسی کام کا کرنا یا ہو نا ظاہرہو، “فعل “کہلاتا ہے جب کہ کام کرنے والا “فاعل” کہلاتا ہےاور جس پر کوئی فعل واقع ہوا ہو”مفعول” کہلاتا ہے مثلاٌ احسن نے خط لکھا۔ اس مثال میں “احسن ” فاعل ہے “لکھا” فعل ہے اور “خط” مفعول ہے۔ دی گئی مثال کے مطابق فعل ، فاعل اور مفعول الگ الگ کیجئے۔

مفعول فعل فاعل جملے
سیب کھایا ارفع ارفع نے سیب کھایا۔
کتاب خریدی احمد احمد نے کتاب خریدی۔
اخبار پڑھا طلحہ طلحہ نے اخبار پڑھا۔
دودھ پیا طلال طلال نے دودھ پیا۔
جوتے خریدے شمائلہ شمائلہ نے جوتے خریدے۔

 

س8۔ حروفِ عطف (و۔اور)وہ حروف ہیں جو دواسموں یا دوجملوں کو آپس میں ملائیں”و” ، “اور” مثلاٌ دل و دماغ، کی بورڈ اور ماؤس ۔ “واؤ” کے استعمال سے دی گئی مثال کے مطابق مرکب الفاظ بنائیے۔

تنوین کے ساتھ الفاظ
گل و بلبل گل، بلبل
شمس و قمر شمس ، قمر
اچھا وبرا اچھا، برا
شام و سحر شام، سحر
ملک و قوم ملک ، قوم
گل و خار گل، خار

س9۔ خط لکھنے کا طریقہ کار واضح کریں۔

ج: سب سے پہلے صفحے کے انتہائی دائیں طرف مقام اور اس کے نیچے تاریخ لکھیے۔

نئی سطر میں مکتوب الیہ کو مناسب انداز میں مخاطب کیجئے اور السلام علیکم لکھیے۔

اس کے بعد خط کامضمون لکھیے۔

آخر میں صفحے کے انتہائی بائیں طرف اپنا نام لکھیے۔ مثال کے طور پر اپنے والد صاحب کے نام خط لکھتے ہیں تویوں لکھیں گے:

23 اکتوبر 2016ء

محترم والدصاحب!

السلام علیکم!

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

آپ کا بیٹا

محمد اسلم

س9۔ دی گئی مثال کو پیشِ نظر رکھتے ہوئے گرمی کی تعطیلات ایک ساتھ گزارنے کے لئے دوست کے نام خط لکھیے۔

ج:  ٹوبہ ٹیک سنگھ

25جولائی 2002ء

پیارے اسد!

السلام علیکم !کل کی ڈاک سے آپ کا خط ملا۔ آپ سب کی خیریت جان کر بڑی مسرت ہوئی ۔ جیسا کہ آپ کو علم ہوگا ہمیں گرمیوں کی چھٹیان جون کے پہلے ہفتےسے ہو چکی ہیں۔ میں آج کل یہ چھٹیاں اپنے گاؤں میں گزار رہا ہوں۔ کیا ہی اچھا ہو کہ آپ کچھ چھٹیاں گزارنے میرے پاس گزاریں اور ہم چند روز مل جل کر ہنسی خوشی وقت بسر کریں۔ ان چھٹیوں میں بڑے بھائی بھی لاہور سے آرہےہیں۔ آپ ان سے مل کر یقیناٌ بہت خوش ہوں گے۔اب تک آپ شہری زندگی گزار رہے ہیں۔ یہاں آپ کو دیہاتی زندگی کو قریب سے دیکھنے کا موقع ملے گا۔ آپ دیکھیں گے کہ دیہات کے لوگ کس قدر سادہ اور مخلص ہوتے ہیں۔ پھردیہات کی کھلی ہو اور قدرتی منظراللہ کی خاص نعمتیں ہیں۔ ہمارے ہاں لاہور کی پرتکلف غذائیں نہ سہی لیکن آپ کی دعا سے سادہ اور صحت بخش غذا کی کمی نہیں۔ ان شاءاللہ یہاں آپ کو ہر قسم کا آرام ملےگا۔ میرے کچھ دوست  بھی آپ سے ملنے کے خواہش مند ہیں۔

زیادہ کیا عرض کروں خط ملتے ہی اپنے ابا جان سے اجازت لے کر ہمارے یہاں پہنچ جائیں اور آنے سے پہلے اپنے پروگرام سے مطلع کریں تاکہ ہم آپ کو لینے کےلئے اسٹیشن پر پہنچ جائیں۔

اپنے ابا جان اور امی جان کی خدمت میں میری طرف سے سلام وعرض کردیں ۔

والسلام

آپ کا پیارادوست

طیب صدیقی

باب ۔11 صبح سویرے

حل مشقی سوالات

سوالنمبر 1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
چھوٹے لڑکے گھرسے نکلے؟ 1.
کام کی خاطر (د) سیر کی خاطر (ج) ناشتے کی خاطر (ب) پڑھنے کی خاطر (الف)
چھوٹے لڑکوں نے ٹھنڈی ہوا میں امبر دیکھا ؟ 2.
سبز (د) سفید (ج) سرمئی (ب) نیلا (الف)
لڑکوں نے کھیتوں میں دیکھی؟ 3.
ایک سبزی (د) ایک ڈالی (ج) ایک نالی (ب) ایک بالی (الف)
اوس کے قطرے لگ رہے ہیں؟ 4.
سونے جیسے (د) موتی جیسے (ج) ہیرے جیسے (ب) چاول جیسے (الف)
مشرق سے ایک فٹ بال اُچھلا؟ 5.
ہیرے جیسے (د) چاندی جیسا (ج) سونے جیسا (ب) چمڑے جیسا (الف)

 

جوابات: (1-ج)(2-الف)(3-ب)(4-ج)(5-ب)

س2۔ مندرجہ ذیل سوالوں کے جواب  لکھیں۔

س1۔ “نور کے تڑکے” سے کیا مراد ہے؟

ج: نور کے تڑکے سے مراد صبح سورج نکلنے سے پہلے کا وقت ہے جب ابھی سورج طلوع نہیں ہو ا ہوتا لیکن ہلکی ہلکی روشنی پھیلی ہوتی ہے۔

س2۔ لڑکے کس کےلئے گھر سے نکلے؟

ج: لڑکے صبح کی سیر کرنے کےلئے گھر سے نکلے۔

س3۔ شاعر نے اوس کے قطروں کو کیا کہا؟

ج: شاعر نے اوس کے قطروں کو موتی کہا ہے۔

س4۔ لڑکوں نے باغ میں جا کر کیا دیکھا؟

ج: لڑکوں نے باغ میں جا کر پھلواڑی دیکھی جسے چھوٹا باغیچہ بھی کہتے ہیں۔

س5۔ اس نظم کا ہر بند تین مصرعو ں کا ہے۔ بتائیے نظم کے کل کتنے مصرعے ہیں؟

ج:اس نظم میں کل سات بند ہیں۔

س3۔موزوں الفاظ کی مدد سے مصرعے مکمل کریں۔

1۔ صبح سویرے ۔۔۔۔ کے تڑکے۔

2۔ دیکھا ایک ۔۔۔۔۔منظر۔

3۔ پتے دیکھے ڈالی۔۔۔۔۔۔۔

4۔ ہل دیکھے اور۔۔۔۔۔ دیکھی۔

5۔ سب کو ہے۔۔۔۔۔ میں جانا۔

جوابات: (1-نور)(2-سہانا)(3-دیکھی)(4-گاڑی)(5-اسکول)

س3۔ درج ذیل الفاظ کو جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
صبح سویرے نیلا نیلا امبر بہت پیار ا لگتا ہے۔ امبر
اوس سے پتے دھل کر نکھر گئے ہیں۔ پتے
پھول کی پتیاں بہت نازک ہوتی ہیں۔ نازک
کسان صبح سے ہل چلارہا ہے۔ ہل
برسات میں ہر طرف سبزہ ہی سبزہ نظر آتا ہے۔ سبزہ

س4۔ بعض الفاظ کے میں اعراب (زبر،زیر،پیش، تشدید) بدلنے سے لفظوں کے معنی بھی بدل جاتے ہیں جیسے”دِکھانا” اور “دُکھانا” کا مطلب ہے “ظاہر کرنا” اور “تکلیف دینا”۔ اسی طرح درج ذیل لفظوں کےمعنی بتائیے۔

معنی الفاظ
درخت کا ایک حصہ پتَا
نشان،گھر کا پتا پتہ
باریک پتلا
مجسمہ پُتلا
سامان چھین لینا لُوٹنا
واپس آنا لوٹنا
جانور کا ایک عضو دُم
سانس دَم

س5۔ اس نظم میں بتایا گیا ہے کہ سورج مشرق سے نکلتا ہے ۔بتائیے سورج غروب کس سمت میں ہوتا ہے؟

ج: سورج مغرب میں غروب ہوتا ہے۔

جو کام موجودہ زمانہ میں ہورہا ہو، اس کا تعلق زمانہ حال سے ہوتا ہے۔ مثلاٌ : سورج مشرق سے نکلتا ہے یا نکل رہاہے۔

حال ماضی
میں نے ایک سہانا منظر دیکھا ہے میں نے ایک سہانا منظر دیکھا تھا۔
ہم نے سبزہ اور ہریالی دیکھی ہے۔ ہم نے سبزہ اور ہریالی دیکھی تھی۔
اوس کے قطرے گررہے ہیں۔ اوس کے قطرے گر رہے تھے۔
میں سیر کے لئے باغ میں گیا ہوں۔ میں سیر کے لئےباغ میں گیا تھا۔
ٹھنڈی ہوا چل رہی ہے۔ ٹھنڈی ہوا چل رہی تھی۔

س7۔ بچے سوچ کر بتائیں کہ وہ صبح سویرے اٹھ کر کیا کرتے ہیں؟

ج: میں روزانہ صبح سویرے اٹھتا ہوں۔ میرے ابو نما ز پڑھنے کے لئے مسجد میں جاتے ہیں۔ میں بھی وضوکرکے ان کے ساتھ مسجد میں جاتا ہوں۔ مسجد سے واپسی پر ہم دونوں باپ بیٹا قریبی باغ میں چلے جاتے ہیں اور پندرہ منٹ وہاں ٹہلتے ہیں۔ گھر آ کر تھوڑی دیر اپنا اسکول کا سبق یاد کرتا ہوں پھر میں دانت صاف کرکے ناشتا کرتاہوں اور اسکول چلاجاتاہوں۔

باب ۔12 میراگاؤں میراگھر

حل مشقی سوالات

س1۔ سبق کے مطابق درج ذیل سوالات کے جواب دیجیے۔

1۔ گاؤں کے لوگ گھر میں کون کون سے جانور پالتے ہیں؟

ج: گاوں کےلوگ گھر وں میں مرغیاں، بکریاں، گائے او ر بھینسیں پالتے ہیں۔

2۔ احمد کے ابو اور چچا کھیتوں میں ہل کیسے چلاتے ہیں؟

ج: احمد کے ابو اور چچا پہلے پہل تو بیلوں کی مدد سے کھیتوں میں ہل چلاتے تھے لیکن اب انہوں نے ہل چلانے کےلئے ایک ٹریکٹر خرید لیا ہے۔ اس سے وہ کم وقت میں زیادہ رقبے پر ہل چلا لیتے ہیں۔

3۔ گاؤں کے میلے میں کون کون سی تفریحات ہوتی ہیں؟

ج: گاؤں کے میلے میں خوب کھیل تماشے ہوتے ہیں۔ کھیلوں کے مقابلے ہوتے ہیں جن میں کبڈی، کشتی، والی بال، رسہ کشی، فٹ بال شامل ہیں۔ لڑکیوں کے لئے چوڑیون اور مہندی کی دکانیں سجتی ہیں۔ کم عمر بچے دوڑ میں حصہ لیتے ہیں۔ بچوں کےلئے جھولے بھی ہوتے ہیں۔

4۔ گاؤں میں عید کا تہوار کیسے منایا جاتا ہے؟

ج: گاؤں میں عید کا تہوار میلے کی طرح ہوتا ہے۔ لوگ کھلے میدان میں عید کی نماز ادا کرتے ہیں۔ سب صاف ستھرے کپڑے پہنتے ہیں۔ ایک دوسرے کے گھر میٹھی چیزیں بھیجتے ہیں اور عید کی نماز پڑھنے کے بعد سب ایک دوسرے سے گلے مل کر “عید مبارک” کہتے ہیں۔

5۔ “گاؤں کےلوگ ایک دوسرے کا بہت خیال رکھتے ہیں” مثال سے واضح کریں؟

ج: گاوں کے لوگ ایک دوسرے کا بہت خیال رکھتے ہیں۔اس کی واضح مثال یہ ہے کہ اگر گاؤں میں کوئی شخص بیمار ہوجائے تو سب گاؤں والے اس کی تیمارداری کرتے ہیں۔ اور اس کی عیادت بھی کرتے ہیں۔

6۔ گاؤں میں شادی کی تقریب کیسی ہوتی ہے؟

ج: گاؤں میں شادی کی تقریب دن کے وقت ہوتی ہے۔ گھر کے صحن یا کھلے میدان میں ڈھولک پر گیت گاتی اور خوب تالیاں بجاتی ہیں۔

7۔ فصلوں سے حاصل ہونے والی مختلف اجناس کے نام تحریر کریں؟

ج: فصلوں سے حاصل ہونے والی مختلف اجناس درج ذیل ہیں۔

گندم

چاول

کپاس

گنا

مکئی

چنا

باجرہ

س2۔ سبق کے مطابق درست الفاظ منتخب کر کے خالی جگہیں پُرکیجیے۔

1۔میں اچھی اور مثالی زندگی گزارنے کے۔۔۔۔۔ بھی سیکھ رہا ہوں۔

2۔گائے اور بھینس کے دودھ سے دہی، مکھن اور ۔۔۔۔۔ بنا لیا جاتا ہے۔

3۔ میرے گاؤں میں عید کا تہوار بھی۔۔۔۔۔۔ کی طرح ہوتا ہے۔

4۔ میرے دادا جان عمر رسیدہ ہونے کے باوجود ۔۔۔۔۔۔ ہیں۔

5۔میر ے گاؤں کے لوگ بہت۔۔۔۔۔۔ ہیں۔

6۔ گاؤں کے سب لوگ۔۔۔۔۔۔ میدان میں عید کی نماز ادا کرتے ہیں۔

جوابات: (1-طور طریقے)(2-گھی)(3-میلے)(4-صحت مند)(5-جفاکش)(6۔کھلے)

س3۔درج ذیل الفاظ کے متضاد الفاظ تحریر کریں۔

معنی الفاظ
تن درست بیمار
باسی تازہ
گرم ٹھنڈا
بڑا چھوٹا
ناپسند پسند
شہر گاؤں

س4۔ دی گئی مثال کے مطابق فقرے کا زمانہ تبدیل کیجیے۔

سب اکٹھے ناشتہ کریں گے سب اکٹھے ناشتہ کرتے ہیں۔
وہ کھیتوں میں کام کریں گے۔ وہ کھیتوں میں کام کرتے ہیں۔
کسان کھیت میں ہل چلائے گا۔ کسان کھیت میں ہل چلاتا ہے۔
شادی کی تقریب دن کے وقت ہوگی۔ شادی کی تقریب دن کے وقت ہوئی ہے۔
آٹے کی چکی چلے گی۔ آٹے کی چکی چل رہی ہے۔

س5۔ ایسے الفاظ جن میں کسی کام کاکرنا یا ہونا ظاہر ہو “فعل” کہلاتے ہیں۔ جبکہ کام کرنے والا”فاعل” کہلاتا ہے۔ مثلاٌ “بیٹھا” فعل ہے اور “بیٹھے والا” فاعل ہے۔ درج ذیل افعال (فعل کی جمع)کے فاعل بنائیے۔

فاعل فعل
کھانے والا کھایا
جیتنےوالا جیتا
چلانے والا چلایا
پڑھانے والا پڑھا

باب ۔13 کھیوڑہ کی سیر

حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
کھیوڑہ کے مقام پر نمک کی بہت بڑی موجود ہے؟ 1.
وادی (د) پہاڑی (ج) کان (ب) چٹان (الف)
کھیوڑہ کا مقام واقع ہے؟ 2.
گجرات میں (د) جہلم میں (ج) راول پنڈی میں (ب) لاہور میں (الف)
کان میں نمک کے پانی کے بڑے بڑے ہیں؟ 3.
تالاب (د) دریا (ج) جوہڑ (ب) چشمے (الف)
نمک  کی کان کا درجہ حرارت سردی گرمی میں رہتا ہے؟ 4.
برفیلا (د) گرم (ج) معتدل (ب) ٹھنڈا (الف)
کان کی ایک منزل پر مریضوں کے لئے ہسپتال بنایا گیا ہے؟ 5.
جگر کے (د) سانس کے (ج) آنکھوں کے (ب) دل کے (الف)
نمک حاصل کرنے کے ذرائع ہیں؟ 6.
پانچ (د) چار (ج) تین (ب) دو (الف)
دُنیا کی دوسری بڑی نمک کی کان ہے؟ 7.
گجرات (د) پھالیہ (ج) منڈی بہاؤالدین (ب) کھیوڑہ (الف)
ابو جان نے ٹکٹ خریدے اور اپنے ساتھ لے لیا؟ 8.
ایک گائیڈ (د) ایک شاپنگ بیگ (ج) ایک سوٹ کیس (ب) اپنا کیمرہ (الف)
کھیوڑہ میں موجود نمک کی کان دریافت ہوئی تھی؟ 9.
شیر شاہ سوری کے زمانے میں (د) سکندراعظم کے زمانے میں (ج) بہادر شاہ ظفر کے زمانے میں (ب) اورنگزیب کے زمانے میں (الف)
کھیوڑہ میں موجود نمک کی کان کی منزلیں ہیں؟ 10.
اکیس (د) انیس (ج) سترہ (ب) پندرہ (الف)

 

جوابات: (1-ب)(2-ج)(3-د)(4-ب)(5-ج) (6-الف)(7-الف)(8-د)(9-ج)(10-ب)

س2۔ سبق کے مطابق مندرجہ ذیل سوالات کے جواب دیجیے۔

1۔ نمک حاصل کرنے کے دو بڑے ذرائع کون کون سے ہیں؟

ج: نمک حاصل کرنے کے دو بڑے ذرائع سمندر کا پانی اور نمک کے پہاڑ ہیں۔

2۔ سانس کے مریض ، نمک کی کان میں کس طرح صحت یاب ہوتے ہیں؟

ج: کان کی ایک منزل پر سانس کی مریضوں کے لئے ایک ہسپتال بنایا گیا ہے جہاں پر ان کا فوری علاج کیا جاتا ہے اور وہ صحت یاب ہو جاتے ہیں۔

3۔ نمک کی اینٹوں سے تیارکردہ عمارتون میں کسی دو کے نام تحریر کیجیے؟

ج: یوں تو کان میں کئی عمارتوں کے ماڈل تیار کر کے رکھے گئے ہیں ان میں بادشاہی مسجد اور شیش محل کے ماڈل قابل ِ ذکر ہیں۔

4۔ گائیڈ نے سعد اور اس کے گھر والوں کو نمکین پانی کے تالاب کے نزدیک جانے سے کیوں منع کردیا؟

ج: گائیڈ نے انہیں بتایا کہ نمکین پانی کے تالاب کافی گہرے ہیں۔ دوسرے دن میں نمک کی مقدار بہت زیادہ ہے  جو انسان کے لئے انتہائی خطرناک ہے۔ یہی وجہ ہے کہ گائیڈ نے انہیں نمکین پانی کے تالاب کے پاس جانے سے منع کیا۔

5۔ سعد کی امی کو نمک سے بنی کون سی اشیاء پسند آئیں؟

ج: سعد کی امی کو نمک سے بنی سجاوٹی اشیاء بہت پسند آئیں۔

س3۔ سبق کے حوالے سے درست لفظ منتخب کر کے خالی جگہیں پر کیجیے۔

1۔ پاکستان میں کھیوڑہ کے مقام پر دنیا کی۔۔۔۔۔ نمک کی کان ہے۔

2۔ نمک کی کان کی ۔۔۔۔ منزلیں ہیں۔

3۔ نمک کی کان کی دریافت ۔۔۔۔۔ کے زمانے میں ہوئی تھی۔

4۔ انہوں نے ۔۔۔۔ کا شکریہ ادا کیا۔

5۔ سعد نے معلومات کا۔۔۔۔۔ حال اپنے ابواور امی کو سنایا۔

جوابات: (1-دوسری بڑی)(2-سترہ)(3-سکندراعظم)(4-گائیڈ)(5-مختصر)

س3۔درج ذیل الفاظ کو جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
پاکستان کے شمالی پہاڑوں میں کان کنی ہوتی ہے۔ کان کنی
ہمارے اُستاد صاحب کے پاس معلومات کا کافی ذخیرہ ہے۔ معلومات
اللہ تعالیٰ سب مریضوں کو جلد صحت یاب کرے۔ آمین صحت یاب
کراچی کی آب و ہوا معتدل ہے۔ معتدل
یہ ایک یاد گار سفر تھا۔ یادگار

باب ۔14 ہماری کائنات

حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
ہماری زمین چکر لگاتی ہے؟ 1.
تمام (د) سورج کے گرد (ج) ستارے کے گرد (ب) چاند کے گرد (الف)
چاند کا قطر ،زمین کے کے قطر کے ہے؟ 2.
ان میں سے کوئی نہیں (د) ایک تہائی (ج) ایک چوتھائی (ب) برابر (الف)
ستارے پیدا کرتے ہیں؟ 3.
پانی (د) روشنی اور حرارت (ج) حرارت اور ہوا (ب) روشنی اور پانی (الف)
چاند زمین کے گرد اپنا چکر مکمل کرتا ہے؟ 4.
تمام (د) تقریباٌ انتیس (29) دن میں (ج) تقریباٌ پچیس(25) دن میں (ب) تقریباٌ چالیس(40) دن میں (الف)
پہلی تاریخ کے چاند کو کہتے ہیں؟ 5.
بلال (د) قمر (ج) بدر (ب) ہلال (الف)
کہکشاں ،ستاروں کا مجموعہ ہے؟ 6.
ان میں سے کوئی نہیں (د) اربوں کھربوں (ج) ہزاروں (ب) لاکھوں (الف)
دن کے وقت ہمین ستارے نظر نہیں آتے کیونکہ ؟ 7.
ان کی اپنی روشنی نہیں ہوتی (د) یہ دن کو نہیں چمکتے (ج) سورچ کی روشنی ہوتی ہے (ب) یہ دن کو نہیں ہوتے (الف)
چاند ہمیں بڑا نظر آتا ہے کیونکہ؟ 8.
یہ زمین سے دور ہے (د) یہ زمین کے نزدیک ہے (ج) یہ بہت روشن ہے (ب) یہ بہت بڑا ہے (الف)
ستارے اصل میں ہماری زمین ہے؟ 9.
بہت بڑے ہیں (د) بڑے ہیں (ج) برابر ہیں (ب) چھوٹے ہیں (الف)
سیارے چمکتے ہیں؟ 10.
مصنوعی روشنی سے (د) سورج کی روشنی سے (ج) دوسرے ستاروں کی روشنی سے (ب) اپنی روشنی سے (الف)

 

جوابات: (1-ج)(2-ب)(3-ج)(4-ج)(5-الف) (6-ج)(7-الف)(8-ج)(9-د)(10-ج)

س2۔ درج ذیل سوالات کے مختصراٌ جوابات لکھیں؟

1۔ ستارے دن کے وقت کیوں دکھائی نہیں دیتے ؟

ج: دن کے وقت سورج کی روشنی بہت تیز ہوتی ہے۔ اس لیے دن کے وقت ستارے ہمیں دکھائی نہیں دیتے۔

2۔ رات اور دن کیسے بنتے ہیں؟

ج: ہماری زمین سورج کے گرد چکر لگاتی ہے۔ جو حصہ سورج کے سامنے ہوتا ہے سورج کی روشنی پڑنے کی وجہ سے اس حصے میں دن ہوتا ہے اور جو حصہ سورج کے سامنے نہیں آتا وہاں سورج کی روشنی نہیں پہنچتی اس لیے وہاں رات ہوتی ہے۔

3۔ ایک شمسی سال کتنے دنوں میں مکمل ہوتا ہے؟

ج: ایک شمسی سال قریباٌ 365 دنوں میں مکمل ہوتا ہے۔

4۔ ستارے اور سیارے میں فرق بیان کریں؟

ج: ستارے جسامت میں سیاروں سے بڑے ہوتے ہیں۔ یہ ساکن جسم ہوتے ہیں اور اپنی روشنی سے چمکتے ہیں۔ سیارے جسامت میں چھوٹے ہوتے ہیں۔ یہ متحرک ہوتے ہیں۔ ان کی اپنی کوئی روشنی نہیں ہوتی بلکہ یہ سورج کی روشنی سے چمکتے ہیں۔

5۔ ایک قمری سال کتنے مہینوں کا ہوتا ہے؟

ج: ایک قمری سال میں بارہ مہینے ہوتے ہیں۔

6۔ نظامِ شمسی سے کیا مرا د ہے؟

ج: سور ج ،سیاروں ،ذیلی سیارون اور سیارچوں کے ساتھ مل کر ایک نظام بناتا ہے۔ جسے “نظامِ شمسی ” کہا جاتا ہے۔ سورج اس نظام  ِ شمسی کا مرکز ہے۔

س3: درست لفظ کا انتخاب کرکے جملے مکمل کریں۔

1۔ ۔۔۔۔۔ زمین سے بہت زیادہ فاصلے پر ہوتے ہیں۔                                                                (ستارے ، سیارے)

2۔ ہماری زمین بھی ایک ۔۔۔۔۔۔ ہے۔                               (سیارہ۔ ستارہ)

3۔ ستارے مسلسل اپنے اپنے ۔۔۔۔۔۔۔ میں گردش کرتے رہتے ہیں۔                                               (محور، مدار)

4۔ چودھویں کے چاند کو ۔۔۔۔۔۔ کہتے ہیں۔                                   (بدر، قمر)

5۔ سورج ،نظامِ شمسی کا۔۔۔۔۔۔۔ ہے۔                                       (مرکز، محور)

جوابات: (1-ستارے)(2-سیارہ)(3-مدار)(4-بدر)(5-مرکز)

س4۔ درج ذیل الفاظ کو پڑھیے اور مثال کے مطابق مذکر اور مؤنث الگ الگ کریں۔

مؤنث مذکر
روشنی دن
زمین چاند
ستارہ
کہکشاں کائنات

س5۔ دی گئی مثال کے مطابق متضاد الفاظ کو آپس میں ملائیں۔

متضاد الفاظ
جاگنا سونا
تاریکی روشنی
شام صبح
رات دن
زمین آسمان
غروب طلوع

باب۔ 15 ماں کاخواب

حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔
میں سوئی جو ایک شب تو دیکھا یہ۔۔۔۔؟ 1.
آب (د) تاب (ج) خواب (ب) باب (الف)
اندھیرا ہے اور۔۔۔۔۔ ملتی نہیں؟ 2.
ماہ (د) راہ (ج) آہ (ب) چاہ (الف)
دیے سب کے۔۔۔۔۔۔ میں جلتے ہوئے؟ 3.
ذاتوں (د) راتوں (ج) باتوں (ب) ہاتھوں (الف)
وہ پیچھے تھا اور تیز۔۔۔۔۔۔ نہ تھا؟ 4.
چلتا (د) ڈھلتا (ج) ملتا (ب) ٹلتا (الف)
ترے آنسوؤں نے۔۔۔۔۔ اسے؟ 5.
بچایا (د) دکھایا (ج) بجھایا (ب) جلایا (الف)
لڑکوں نے پوشاک پہنی ہوئی تھی؟ 6.
ہیرے جیسی (د) نیلم جیسی (ج) یاقوت جیسی (ب) زمرد جیسی (الف)
وہ آگے پیچھے چل رہے تھے؟ 7.
ہنستے ہنستے (د) اٹکھیلیاں کرتے (ج) چپ چاپ (ب) باتیں کرتے (الف)
اسی سوچ میں تھی کہ میں نے دیکھا؟ 8.
اپنا خاوند (د) اپنا بیٹا (ج) اپنا باپ (ب) اپنابھائی (الف)
میں بے قراررہتی ہوں؟ 9.
جدائی کی وجہ سے (د) تھکاوٹ کی وجہ سے (ج) غربت کی وجہ سے (ب) بیماری کی وجہ سے (الف)
میں ہر روز ہارپروتی ہوں؟ 10.
خوشیوں کے (د) غموں کے (ج) موتیوں کے (ب) اشکوں کے (الف)
بچے نے ماں کو جواب دیا؟ 11.
تیز لہجے میں (د) سامنے آکر (ج) منہ پھیرکے (ب) آہستگی سے (الف)
بچہ ماں سے کہنے لگا؟ 12.
آنسودکھاکر (د) دیادکھاکر (ج) پوشاک دکھا کر (ب) واپس مڑکر (الف)
اس دیے کو بجھایا ہے؟ 13.
آنسوؤں نے (د) پانی نے (ج) بارش نے (ب) کم تیل نے (الف)

 

جوابات: (1-ب)(2-ج)(3-الف)(4-د)(5-ب) (6-الف)(7-ب)(8-ج)(9-د)(10-الف)(11۔ب)(12۔ج)(13۔د)

س2۔ دیے گئے سوالات کے جواب لکھیں۔

1۔ سوتے میں خواب کس نے دیکھا؟

ج: سوتے میں ایک ماں نے خواب دیکھا جس کا بیٹا پاچکاتھا۔

2۔ لڑکوں نے کیسی پوشاک پہنی ہوئی تھی؟

ج: لڑکوں نے زمرد جیسی سبز پوشاک پہنی ہوئی تھی۔

3۔ لڑکوں کے ہاتھوں میں کیا ہے؟

ج: لڑکوں کے ہاتھوں میں دیے تھے جو جل رہے تھے۔

4۔ ماں نے اپنے بیٹے کو دیکھ کر کیاکہا؟

ج: ماں نے کہا کہ تم مجھے اکیلا چھوڑ کر آگئے ہو۔ تمہیں میری ذرا بھی پروا نہیں ہے۔ میں تمہاری جدائی میں ہر وقت روتی رہتی ہوں۔

5۔ لڑکے کا دیا کیسے بجھا تھا؟

ج: لڑکے کی ماں اس کی جدائی میں ہروقت روتی رہتی تھی۔ اس کی ماں کے آنسوؤں نے لڑکے کے دیے کو بجھا دیا تھا۔

س3۔ نظم کےمطابق خالی جگہ پر کریں۔

1۔ یہ دیکھا کہ میں جا۔۔۔۔ ہوں کہیں۔

2۔ تودیکھا۔۔۔۔۔ ایک لڑکوں کی تھی۔

3۔ دیے سب کے ۔۔۔۔۔ میں جلتے ہوئے۔

4۔ مجھے چھوڑ کر آگئے ۔۔۔۔۔ کہاں۔

5۔ رُلاتی ہے تجھ کو۔۔۔۔۔ مری۔

جوابات: (1-رہی)(2-قطار)(3-ہاتھوں)(4-تم)(5-جدائی)

س4۔ مندرجہ ذیل الفاظ کو جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
رات میں نے ایک ڈراؤنا خواب دیکھا۔ خواب
جہاں کہیں رش دیکھیں قطار بنا لینا چاہیے۔ قطار
ماں اپنے بچے کی جدائی میں روتی رہتی تھی۔ جدائی
مجھے اس سوال کا جواب آتا ہے۔ جواب
بھلائی کے کاموں بڑھ چڑھ کر حصہ لینا چاہیے۔ یادگار

س5۔ وہ زمانہ جوگزرچکا ہو ماضی کہلاتا ہے مثلاٌ

ماں نے خواب دیکھا۔              اس نے منہ پھیر کر جواب دیا۔

جوزمانہ گزررہا ہو اسے حال کہتے ہیں۔ مثلاٌ

ماں خواب دیکھ رہی ہے۔                 ہر روز اشکوں کے ہار پروتی ہوں۔

دی گئی مثالوں کے مطابق ماضی کے جملوں کو حال کے جملوں میں تبدیل کریں۔

حال کےجملے ماضی کے جملے
میں سکول جار ہی ہوں میں سکول جا رہی تھی۔
میرادل ڈر سے لرزرہا ہے۔ میرا دل ڈر سے لرز رہا تھا۔
کھلاڑی قطاربنارہے ہیں۔ کھلاڑی قطار بنا رہے تھے۔
وہ تیز نہیں چل رہاہے۔ وہ تیز نہیں چلتا تھا۔
میری جدائی تجھ کو رلا رہی ہے۔ میری جدائی تجھ کو رلا رہی تھی۔

س6۔افسوس،پریشانی، دُکھ اور تکلیف کے اظہار کے لئے استعمال ہونے والے حروف کو “حروف ِ تاسف” کہتے ہیں۔ ان حروف کے بعد (!) لگائی جاتی ہے مثلاٌ

افسوس ،صد افسوس، ہائے ،آہ، حسرت اور اُف وغیرہ

دیے گئے حروفِ تاسف کی مدد سے جملے مکمل کریں۔                     افسوس، افوہ، ہائے ہائے ، آہ

1۔ افسوس!آپ کا بھائی حادثے کا شکار ہوگیا ۔

2۔ ہائے ہائے !لڑکا کیسے مر گیا؟

3۔ افوہ! میری ٹرین چھوٹ گئی۔

4۔ آہ! وہ ہم سے ہمیشہ کےلئےجدا ہوگیا۔

5۔ افسوس !میرا پرس گم ہوگیا۔

باب 16۔ ہمارے پیشے

حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
انسان اپنی روزی کمانے کےلئے جو کام کرتا ہے اسے کہتے ہیں؟ 1.
مزدوری (د) تجارت (ج) ہنرمندی (ب) پیشہ (الف)
پاکستان کی آبادی دیہات میں رہتی ہے؟ 2.
80 فیصد (د) 70 فیصد (ج) 60 فیصد (ب) 50 فیصد (الف)
گندم، چاول ،مکئی اور کپاس فروخت کی جاتی ہیں؟ 3.
بیرونی ممالک میں (د) ریڑھیوں پر (ج) منڈیوں میں (ب) دکانوں پر (الف)
ہمارے ملک میں پیدا ہونے والا گنا بیچ دیا جاتا ہے؟ 4.
منڈیوں میں (د) دیہاتوں میں (ج) شوگر ملوں کو (ب) غیر ممالک کو (الف)
لکڑی سے  فرنیچر بناتا ہے؟ 5.
معمار (د) بڑھئی (ج) موچی (ب) چرواہا (الف)
دیہات میں مراکز قائم ہیں؟ 6.
گاڑیوں کی مرمت کے (د) کمپیوٹر مرمت کے (ج) سائنسی کاموں کے (ب) صحت کے (الف)
شہر میں رہنے والے تعلیم یافتہ لوگ کام کرتے ہیں؟ 7.
سرکاری دفاتر میں (د) منڈیوں میں (ج) کارخانے میں (ب) دکانوں پر (الف)
دیہی عوام کی اکثریت کا پیشہ۔۔۔۔۔ہے؟ 8.
ہنرمندی (د) صنعت (ج) زراعت (ب) تجارت (الف)
کھیتوں میں۔۔۔۔ کام کرتا ہے؟ 9.
موچی (د) کسان (ج) کمہار (ب) بڑھئی (الف)
ریوڑ چرانے والے کو۔۔۔۔۔۔ کہتے ہیں؟ 10.
چرواہا (د) گوالا (ج) حجام (ب) معمار (الف)
۔۔۔۔ دفاتر اور اداروں میں کام کرتے ہیں؟ 11.
مزدور (د) تاجر (ج) غیر تعلیم یافتہ افراد (ب) تعلیم یافتہ افراد (الف)
کپڑوں کی سلائی کرتا ہے؟ 12.
حجام (د) درزی (ج) بڑھئی (ب) گوالا (الف)

جوابات: (1-الف)(2-ج)(3-ب)(4-ب)(5-ج) (6-الف)(7-د)(8-ب)(9-ج)(10-د)(11۔الف)(12۔ج)

س2: مندرجہ ذیل سوالات کے مختصر جوابات دیں۔

1۔ پیشہ کسے کہتے ہیں؟

ج: انسان اپنی اور اپنے خاندان کےلئے روزی کمانے کےلئےجو کام اختیار کرتا ہے اسے پیشہ کہا جاتا ہے۔

2۔ پاکستان کی زیادہ تر آبادی کہاں رہتی ہے؟

ج: پاکستان کی زیادہ تر آبادی دیہات میں رہتی ہے۔

3۔ ہماری زرعی اجناس کون کون سی ہیں؟

ہماری زرعی اجناس میں گندم، چاول، چنا، کپاس، گنا، مختلف قسم کی سبزیاں  اور پھل شامل ہیں۔

4۔ دیہات میں کون کون سے مویشی پالے جاتے ہیں؟

ج: دیہات میں پالے جانے والی مویشی ،گائے ،بیل،بھینس ،بکری، بھیڑ اور مرغی وغیرہ ہیں۔

5۔ لوگ ہنر کیوں سیکھتے ہیں؟

ج: لوگوں کو اپنی روزی کمانے کےلئے کوئی نہ کوئی کام ضرور سیکھنا پڑتا ہے یہی وجہ ہے کہ لوگ اچھے روزگار کےلئے ہنر سیکھتے ہیں۔

س3۔ مندرجہ ذیل الفاظ کے مترادف لکھیئے۔

مترادف الفاظ
گاؤں دیہات
پڑھا لکھا ان پڑھ
ایمان دار دیانت دار
جفاکش محنتی
فن ہنر

س4۔مندرجہ ذیل جملوں کو منفی جملوں میں تبدیل کریں۔

1۔ کسان فصلوں سے اپنی ضروریات پوری کرتے ہیں۔

2۔ دیہی خواتین مردوں کا ہاتھ بٹاتی ہیں۔

3۔ معمار دکان اور دکانیں تعمیر کرتا ہے۔

4۔ ہمارے ملک میں ہنرمندوں کی کمی ہے۔

5۔ بازار مختلف اشیاء سے بھرے ہوئے ہیں۔

جواب۔

1۔ کسان فصلوں سے اپنی ضروریات پوری نہیں کرتے۔

2۔ دیہی خواتین مردوں کا ہاتھ نہیں بٹاتی ہیں۔

3۔ معمار مکان اور دکانیں تعمیر نہیں کرتا ہے۔

4۔ ہمارے ملک میں ہنر مندون کی کمی نہیں ہے۔

5۔ بازار مختلف اشیاء سے بھرے ہوئے نہیں ہیں۔

باب 17۔ میں سکاؤٹ بنوں گا

حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
خالد یومِ پاکستان کی تقریب میں شرکت کرنے کےلئے گیا؟ 1.
گلشنِ اقبال (د) شالامار باغ (ج) اقبال پارک (ب) ریس کورس پارک (الف)
سکاؤٹس دوسروں کے کام آتے ہیں؟ 2.
رضاکارانہ طور پر (د) کبھی کبھار (ج) چیزیں لے کر (ب) پیسے لے کر (الف)
ہرسکاؤٹ دوسرے سکاؤٹ کو سمجھتا ہے؟ 3.
محلے دار (د) رشتے دار (ج) بھائی (ب) دوست (الف)
سکاؤٹ تحریک کا آغاز ہوا؟ 4.
برطانیہ سے (د) جرمنی سے (ج) امریکا سے (ب) فرانس سے (الف)
پاکستان کے پہلے چیف سکاؤٹ تھے؟ 5.
ایوب خان (د) سکندرمرزا (ج) لیاقت علی خان (ب) قائداعظم ؒ (الف)
تقریب میں لڑکیان اور لڑکے مہمانوں کی مددکررہے تھے؟ 6.
کھاناکھانے میں (د) بیٹھنے میں (ج) ہوادار جگہ دیکھنے میں (ب) پانی پینے میں (الف)
سات سے گیارہ سال کے سکاؤٹ کہلاتے ہیں؟ 7.
ینگ سکاؤٹ (د) بوائے سکاؤٹ (ج) شاہین سکاؤٹ (ب) ابتدائی سکاؤٹ (الف)
ہر شاہین سکاؤٹ وعدہ کرتا ہے کہ میں کہنا مانوں گا؟ 8.
دوسرے سکاؤٹ کا (د) والدین کا (ج) اساتذہ کا (ب) اللہ تعالیٰ کا (الف)

جوابات: (1-ب)(2-د)(3-ب)(4-د)(5-الف) (6-ج)(7-ب)(8-الف)

س2۔ درج ذیل سوالات کے جواب لکھیں۔

1۔ سکاؤٹ کا کیا مطلب ہے؟

ج: سکاؤٹ کا لفظی مطلب تو نگران ہے لیکن اس کا اصطلاحی مطلب ہے دوسروں کی بے لوث خدمت کرنے والا۔

2۔ سکاؤٹنگ کی تحریک کا بانی کون تھا؟

ج: سکاؤٹنگ کی تحریک کا آغاز 1907ء میں برطانیہ سے ہوا۔

3۔ پاکستان کےپہلے چیف سکاؤٹ کون تھے؟

ج: پاکستان کے پہلے چیف سکاؤٹ قائداعظم محمد علی جناح تھے۔

4۔ سکاؤٹس کے اجتماع کو کیا کہتے ہیں؟

ج: سکاؤٹس کے اجتماع کو جمبوری کہتے ہیں۔

س3: مناسب الفاظ کی مدد سے خالی جگہیں پر کریں۔

1۔ لڑکے سکاؤٹ ہیں او ر لڑکیاں۔۔۔۔۔

2۔ سکاؤٹ ۔۔۔۔۔۔ہوتا ہے۔

3۔ شاہین سکاؤٹس کا ۔۔۔۔۔ ہے بلند پرواز۔

4۔ سکاؤٹس ۔۔۔۔۔ کی مدد کرتے ہیں۔

5۔ سکاؤٹس کسی میدان میں۔۔۔۔۔۔ نہیں ہارتے۔

جوابات: (1-گرل گائیڈز)(2-ایمان دار)(3-نصب العین)(4-متاثرین)(5-ہمت)

س4۔ الفاظ کو اپنے جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
ایمن بہت محنتی لڑکی ہے۔ محنتی
گھوڑا ایک وفادار جانور ہے۔ وفادار
صفائی نصف ایمان ہے۔ صفائی
ہماری فوج بہت بہادر ہے۔ بہادر
کسان بہت ایمان دار تھا۔ ایمان دار

) کا نشان لگائیے۔O)اور غلط کےسامنے (Pس5۔ سبق کے مطابق درست بیان کےسامنے (

P لڑکے سکاؤٹ ہیں اور لڑکیاں گرل گائیڈز۔ الف
O سکاؤٹ کا مطلب ہے ایمان دار۔ ب
P سکاؤٹ محبِ وطن ہوتا ہے۔ ج
O سکاؤٹنگ کی تحریک 1907ء سے پہلے شروع ہوئی۔ د
P قائداعظم محمد علی جناح ؒ پاکستان کے پہلے چیف سکاؤٹ تھے۔ ہ
O لارڈ بیدن پاول فوجی نہیں تھا۔ و

باب 18۔ ٹوٹ بٹوٹ نے کھیر پکائی

حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
خالہ جان کھیر پکانے کے لئے لائیں؟ 1.
دودھ (د) شکر (ج) لکڑی (ب) چمچ (الف)
دیا سلائی لے کرآئیں؟ 2.
خالہ (د) پھوپھی (ج) چچی (ب) ممانی (الف)
آگ جلائی تھی؟ 3.
امی جان نے (د) تائی نے (ج) بھابھی نے (ب) باجی نے (الف)
چاول اور شکر لائے تھے؟ 4.
نانا جان (د) ابا جان (ج) دادا جان (ب) بھائی جان (الف)
بہنیں لائی تھیں؟ 5.
چاول (د) دودھ ملائی (ج) چمچہ (ب) دیگچی (الف)
کھیر ہاتھ آئی تھی؟ 6.
کسی کے ہاتھ نہ آئی (د) دھوبی کے (ج) نائی کے (ب) حلوائی کے (الف)

جوابات: (1-ب)(2-ج)(3-د)(4-الف)(5-ج) (6-د)

س2۔ نظم کے مطابق سوالات کے جواب دیں۔

1۔ ٹوٹ بٹوٹ نے کیا پکایا؟

ج: ٹوٹ بٹوٹ نے کھیر پکائی۔

2۔ کھیر پکانے کے لئے آگ کس نے جلائی؟

ج: کھیر پکانے کےلئے آگ ٹوٹ بٹوٹ کی امی نے جلائی۔

3۔ دیگچی اور چمچہ کون لایا؟

ج: دیگچی اور چمچہ نوکر لے آئے۔

4۔ کھیر پکانے کے لئے دودھ ملائی کون لایا؟

ج: دودھ اور ملائی(بالائی) ٹوٹ بٹوٹ کی بہنیں لے کر آئی تھیں۔

5۔ نظم کے شاعر کا کیا نام ہے؟

ج: نظم کے شاعر کا نام صوفی مصطفیٰ تبسم ہے۔

س3۔ مناسب الفاظ کی مدد سے خالی جگہ پر کریں۔

1۔ خالہ اس کی ۔۔۔۔۔ لائی۔

2۔ ٹوٹ بٹوٹ نے ۔۔۔۔۔پکائی۔

3۔ سب نے آ کر ۔۔۔۔۔ مچائی۔

4۔ کھیر کسی کے ۔۔۔۔۔ نہ آئی۔

جوابات: (1-لکڑی)(2-کھیر)(3-دھوم)(4-ہاتھ)

س4۔ دیے گئے الفاظ کو جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
بوڑھی عورت نے سردی سے بچنے کےلئے آگ جلائی۔ آگ
میراگاؤں بہت خوب صورت ہے۔ گاؤں
ساری خلقت کھیر کھانے دوڑی آئی۔ خلقت
دھوبی کپڑے دھو رہا ہے۔ دھوبی
لڑائی کرنا اچھی بات نہیں ہے۔ لڑائی

س5۔ اپنے استاد صاحب سے پوچھ کر لکھیں کہ درج ذیل لوگ کیا کام کرتے ہیں۔

                                                                        کام لوگ
دھوبی کپڑے دھونے کا کام کرتا ہے۔ دھوبی
کنجڑا سبزی فروخت کرتا ہے۔ کنجڑا
نائی لوگوں کے بال کاٹتا اور شیو بناتا ہے۔ نائی
پنساری جڑی بوٹیاں فروخت کرتا ہے۔ پنساری
حلوائی مٹھائیاں بناتا ہے۔ حلوائی

باب19۔ ہمارا ماحول

حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
آمنہ نے خوب صورت مچھلی پال رکھی تھی؟ 1.
لکڑی کے صندوق میں (د) شیشے کے مرتبان میں (ج) پلاسٹک کےمرتبان میں (ب) چینی کے مرتبان میں (الف)
امی نے کہ تم نے پانی میں جو رنگ ڈالا تھا وہ تھا؟ 2.
زہریلا (د) زیادہ (ج) پکا (ب) کچا (الف)
ہمارے اردگرد موجود چیزیں کہلاتی ہیں؟ 3.
ہمارے ساتھی (د) ہماری تفریح (ج) ہماری ضروریات (ب) ہمارا ماحول (الف)
ہماری ہوا کو زہریلا کر رہا ہے۔ 4.
زیادہ کھانا پکانا (د) کارخانوں کا دھواں (ج) درختوں کا زیادہ ہونا (ب) ہمارا کھانا پینا (الف)
درختون کے بے دریغ کٹاؤ سے نقصان پہنچا ہے؟ 5.
ہر کسی کو (د) کسان کو (ج) زمین کو (ب) بڑھئی کو (الف)

جوابات: (1-ج)(2-د)(3-الف)(4-ج)(5-ب)

س2۔ سبق کے مطابق درج ذیل سوالات کے جواب دیں۔

1۔ آمنہ کی مچھلی کیوں تڑپ رہی تھی؟

ج: آمنہ نے مچھلی کے مرتبان والے پانی میں رنگ ڈال دیا تھاجو کہ زہریلا تھا۔ اسی وجہ سے آمنہ کی مچھلی تڑپنا شروع کردیا۔

2۔ ماحول سے کیا مراد ہے؟

ج: ہمارے اردگرد کی چیزیں جو براہِ راست ہم پر اثرانداز ہوتی ہیں انہیں ماحول کہا جاتا ہے۔

3۔ ماحول کو آلودہ کرنے والے کوئی سے دو اسباب بیان کریں؟

ج: ماحول کو آلودہ کرنے بہت سے اسباب ہیں ان میں کارخانون اور فیکٹریوں سے نکلنے والا دھواں ہے جو ہماری فضا کو آلودہ کر رہا ہے۔ اس سے فضا متاثر ہورہی ہے۔ اس کے علاقہ فیکٹریوں کے زہریلے مادے پانی میں شامل ہوکر اسے آلودہ کررہے ہیں۔ یہ آلودہ پانی انسانوں اور جانوروں دونوں کے لئے انتہائی نقصان کا باعث ہے۔

4۔ ماحولیاتی آلودگی کی اقسام بیان کریں؟

ج: ماحولیاتی آلودگی کی چار قسمیں ہوتی ہیں۔

1۔ آبی آلودگی:

پانی سے ہونے والی آلودگی کو آبی آلودگی کہا جاتا ہے۔ پانی میں مختلف قسم کے زہریلے مادے شامل ہوکر اسے آلودہ کرتے ہیں۔

2۔ زمینی آلودگی:

کوڑاکرکٹ اور پلاسٹک کے تھیلوں سے ہماری زمین آلودہ ہور ہی ہے۔ جس کی وجہ سے یہ کاشت کاری کے قابل نہیں رہی۔

3۔ فضائی آلودگی:

فضا میں مختلف قسم کی گیسوں کا ہونا، دھوئیں کا ہوا میں شامل ہونا اور گاڑیوں سے نکلنے والا دھواں فضائی آلودگی کا باعث بنتا ہے۔

4۔ شور کی آلودگی:

ٹریفک کا شور ہمارے کانوں پر اثر انداز ہوتا ہے اور اس سے شور کی آلودگی پیدا ہوتی ہے جو بہت سے بیماریوں کا سبب بنتی ہے۔

5۔ ہم اپنے ماحول کو کیسے صاف رکھ سکتے ہیں؟

ج: درخت ماحول کو صاف رکھنے کا اہم ذریعہ ہیں۔ درختون کی وجہ سے فضا میں آکسیجن کی مقدار بڑھتی ہے جو ماحول دوست ہے۔ اس لیے زیادہ سے زیادہ درخت لگانے چاہیئں ۔ اس کے علاوہ کوڑے کرکٹ کو جلانا نہیں چاہیے ،اسے نالیوں اور نہروں میں بھی نہیں پھینکنا چاہیے۔ کوڑے کرکٹ کو کوڑے دان میں ڈالیں۔

6۔ ماحول کو صاف رکھنے کےلئے درخت کیوں اہم ہیں؟

ج: درختوں سے آکسیجن گیس میں اضافہ ہوتا ہے۔ آکسیجن سانس لینے کےلئے ضروری گیس ہے۔ درخت زمین کے کٹاؤ کو روکتے ہیں۔ درختوں کی وجہ سے درجہ حرارت میں کمی آتی ہے جس سے ماحول خوشگوار رہتا ہے۔

س3۔ درج ذیل الفاظ کے متضاد الفاظ تحریر کریں۔

متضاد الفاظ
میلا صاف
مردہ زندہ
غیر ضروری ضروری
دشمن دوست
اندر باہر
بے جان جان دار
دور پاس
نا سمجھ سمجھ

س4۔ درج ذیل الفاظ کو جملوں میں استعمال کریں۔

جملے الفاظ
ہم نے اپنا گھر تبدیل کرلیا ہے۔ تبدیل
آلودہ فضا میں سانس لینے سے انسان بیمار ہو جاتا ہے۔ آلودہ
ہمارا اردگرد ہمارا ماحول ہے۔ اردگرد
گلی سڑی چیزیں صحت کےلئے نقصان دہ ہیں۔ نقصان دہ
صفائی اللہ تعالیٰ کو پسند ہے۔ صفائی

س5۔ درج ذیل جملوں کو غور سے پڑھیے ان سے اسم معرفہ تلاش کیجیئے اور اس کی قسم کا نام لکھیے۔

مثال: قائداعظم پاکستان کے بانی ہیں۔ قائداعظمؒ اسم معرفہ اور اسم ِ علم ہے۔

اسم کی قسم اسم معرفہ جملے
اسم ضمیر زینب زینب میری سہیلی ہے۔ اس کے والد ڈاکٹر ہیں۔
اسم اشارہ معلوماتی کتاب یہ ایک معلوماتی کتاب  ہے۔
اسم ِ موصول وہی لوگ وہی لوگ کامیاب ہیں جنہوں نے علم حاصل کیا۔
اسمِ ضمیر علی علی ہونہار لڑکا ہے وہ ہر سال سکول میں اول آتا ہے۔
اسم علم آپﷺ آپﷺ کے دادا کا نام عبدالمطلب تھا۔
اسم موصول اللہ جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے۔
اسم اشارہ ذہین شخص وہ ایک ذہین شخص ہے۔

باب 20۔ پاک چین دوستی

حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
دونوں ملکوں کے درمیان ۔۔۔۔۔بچھائی جائے گی؟ 1.
گیس اور تیل پائپ لائن (د) پانی کی پائپ لائن (ج) گیس پائپ لائن (ب) تیل پائپ لائن (الف)
پاک چین اقتصادی راہداری کا معاہدہ۔۔۔۔۔ ہوا؟ 2.
5  جولائی 2015ء (د) 5 جولائی 2014ء (ج) 5جولائی 2013ء (ب) 5 جولائی 2012ء (الف)
شاہراہِ ریشم کا ایک سرا۔۔۔۔۔ میں ہے اور دوسرا چین میں؟ 3.
پاکستان میں (د) افغانستان میں (ج) ایران میں (ب) نیپال میں (الف)
شاہراہِ ریشم کا کا م مکمل کیا گیا؟ 4.
1980ء میں (د) 1978ء میں (ج) 1976ء میں (ب) 1947ءمیں (الف)
گوادر کو ۔۔۔۔ ملادیا جائے گا؟ 5.
بمبئی سے (د) مکران سے (ج) کاشغر سے (ب) کراچی سے (الف)
چین آزاد ہوا؟ 6.
1950ء میں (د) 1949ء میں (ج) 1948ء میں (ب) 1947ء میں (الف)
شاہراہِ ریشم کو کہا جاتا ہے؟ 7.
شاہراہِ خیبر (د) شاہراہِ خنجراب (ج) شاہراہِ کوہِ قراقرم (ب) شاہراہِ ہمالیہ (الف)
شاہراہِ ریشم چین کے شہر سے ملتی ہے؟ 8.
بیجنگ (د) کاشغر (ج) پیکنگ (ب) سن کیانگ (الف)
شاہراہِ ریشم کی تعمیر کا آغاز ہوا؟ 9.
1960ء میں (د) 1958ء میں (ج) 1955ء میں (ب) 1950ء میں (الف)
شاہراہِ ریشم دُنیا کا عجوبہ ہے؟ 10.
آٹھواں (د) پانچواں (ج) تیسرا (ب) پہلا (الف)
شاہراہِ ریشم کو اعزاز حاصل ہے؟ 11.
مضبوط ترین شاہراہ کا (د) بلند ترین شاہراہ کا (ج) سب سے لمبی شاہرا ہ کا (ب) کم وقت میں مکمل ہونے کا (الف)
اقتصادی راہ داری کے معاہدے کی مالیت ہے؟ 12.
80 ارب ڈالر (د) 60 ارب ڈالر (ج) 50 ارب ڈالر (ب) 46 ارب ڈالر (الف)

جوابات: (1-د)(2-ب)(3-د)(4-ج)(5-ب) (6-ج)(7-ب)(8-ج)(9-ج)(10-د)(11۔ج)(12۔الف)

س2۔درج ذیل سوالوں کےجواب لکھیں۔

1۔ چین کس براعظم میں واقع ہے؟

ج: چین براعظم ایشیا ء میں واقع ہے۔

2۔ چین کب آزاد ہوا؟

ج: چین 1949ء میں آزاد ہوا۔

3۔ چین کو کس اسلامی ملک نے سب سے پہلے تسلیم کیا؟

ج:  چین کو اسلامی ممالک میں سب سے پہلے پاکستان نے تسلیم کیا۔

4۔ دُنیا کا آٹھواں عجوبہ کس شاہراہ کو کہا جاتا ہے؟

ج: دُنیا کا آٹھواں عجوبہ”شاہراہِ ریشم ” کو کہا جاتا ہے جو پاکستان اور چین کو آپس میں ملاتی ہے۔

5۔ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کا فائدہ کسے ہوگا؟

ج: پاک چین اقتصادی راہداری کے منصوبے سے پاکستان کے تمام صوبوں کو فائدہ پہنچے گا۔

س3۔ درج ذیل الفاظ کو جملوں میں استعمال کیجیئے۔

جملے الفاظ
کراچی ساحلِ سمندر پر واقع ہے۔ سمندر
ہم ایک آزاد قوم ہیں۔ آزاد
علی میرا اچھا دوست ہے۔ دوست
تجارت میں ایمان داری سے کام لینا چاہیے۔ تجارت
میں اپنے ملک کا نام روشن کروں گا۔ ملک

س4۔ نیچے دی گئی مثال کےمطابق سادہ جملوں کو منفی جملوں میں تبدیل کیجیے۔

منفی جملے                                          سادہ جملے
میں نے کاپی نہیں خریدی۔ میں نے کاپی خریدی۔
اُس نے امتحان نہیں دیا۔ اُس نے امتحان دیا۔
سیب عمدہ نہیں ہیں۔ سیب عمدہ ہیں۔
کل بارش نہیں ہوئی۔ کل بارش ہوئی
ساجد ملتان نہیں گیا۔ ساجد ملتان گیا۔
ہم نے کھانا نہیں کھایا۔ ہم نے کھانا کھایا

س5۔درخواست لکھنے کا طریقہ بیان کریں۔

ج: جس کے نام درخواست لکھی جارہی ہے سب سے پہلے اس کے عہدے اور ادارے کا نام مع شہر لکھیے۔ اگلی سطر کے درمیان میں “جنابِ عالی!” لکھیے۔

تیسری سطر میں درخواست کے مضمون کا آغاز “مودبانہ گزارش ہے” سے کیجیے اور نہایت اختصار کے ساتھ اپنا مُدعا بیان کریں۔ آخر میں درخواست قبول کرنے کی نہایت ادب کے ساتھ استدعا کریں۔

اس کے بعد اگلی سطر کے درمیان سے تھوڑا سا بائیں” العارض” لکھیے جس کا مطلب ہے عرض کرنے والا۔ “العارض” کے نیچے اپنا نام اور دیگر معلومات درج کیجیے۔ آخر میں اپنے نام کے دائیں طرف تاریخ لکھیں۔

مثال کے طور پر اگر آپ اپنے سکول کے ہیڈ ماسٹر کے نام درخواست لکھ رہے ہیں تو یوں لکھیں گے۔

بخدمت جناب ہیڈ ماسٹر صاحب گورنمنٹ ہائی سکول ،رینالہ خورد ، ضلع اوکاڑہ۔

جنابِ عالی!

مودبانہ گزارش ہے کہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

العارض

محمد اسد

جماعت پنجم ، رول نمبر 14

12۔اکتوبر 2016

دی گئی مثال کو پیشِ نظر رکھتے ہوئے بھائی کی شادی کےلئے چھٹی کی درخواست لکھیں۔

ج:         

جناب ہیڈ ماسٹر صاحب گورنمنٹ پبلک ہائی سکول ،بہاولپور۔

جنابِ عالی!

مودبانہ گزارش ہے کہ میرے بڑے بھائی جان کی شادی بروز جمعۃ المبارک بتاریخ 22 اپریل 2016 منعقد ہونا قرار پائی ہے۔ برات لاہور جائے گی اور ہفتے کو دعوتِ ولیمہ ہے براہِ کرم 21 تا 23 اپریل 2016ء تین یوم کی رخصت عنایت فرمائیں۔ آپ کی عین نوازش ہوگی۔

العارض

عبدالرحمنٰ

جماعت پنجم فریق (بی) رول نمبر 25

20اپریل 2016ء

س6۔ حروف استفہام مناسب جگہ استعمال کر کے سادہ جملوں کو سوالیہ جملوں میں تبدیل کیجیئے اور آخر میں سوالیہ کی علامت (؟) لگائیے۔

سوالیہ جملے                                          سادہ جملے
وہ کب گھر پہنچے؟ وہ گھر پہنچے۔
کیا یہ اُس کا قلم ہے؟ یہ اس کا قلم ہے۔
ہم وہاں کیوں نہیں جاسکتے ؟ ہم وہاں نہیں جاسکتے۔
کیا تمہاری کتاب یہاں ہے؟ تمھاری کتاب یہاں ہے۔
کیا وہ امجد ہے؟ وہ امجد ہے۔
کیا تم گھر آؤ گے؟ تم گھر آؤگے۔

باب21۔ ایک گائے اور بکری

حل مشقی سوالات

1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
چراگاہ میں بے شمار درخت تھے؟ 1.
مالٹوں کے (د) امرودوں کے (ج) آموں کے (ب) اناروں کے (الف)
چراگاہ میں سایہ دار درخت تھے؟ 2.
صنوبر کے (د) پیپل کے (ج) برگد کے (ب) چیڑھ کے (الف)
چراگاہ میں صدائیں آتی تھیں؟ 3.
طائروں کی (د) بچوں کی (ج) چڑیوں کی (ب) جانوروں کی (الف)
کسی ندے کے پاس چرتے چرتے آنکلی؟ 4.
ایک بھینس (د) ایک بلی (ج) ایک بھیڑ (ب) ایک بکری (الف)
گائے بکری سے گلہ کر رہی تھی؟ 5.
دوسری گائے کا (د) آدمی کا (ج) شیر کا (ب) قسمت کا (الف)
آدمی گائے کو بیچ دیتا ہے اگر؟ 6.
لڑاکا ہو (د) بیمارہو (ج) وہ دبلی ہو (ب) وہ غصیلی ہو (الف)

جوابات: (1-الف)(2-ج)(3-د)(4-الف)(5-ج) (6-ب)

س2۔ مندرجہ ذیل سوالوں کے جوابا ت دیں۔

1۔ چراگہ (چراگاہ) میں کون کون سے درخت تھے؟

ج:  چراگاہ میں اناروں کے اورپیپل کے سایہ دار درخت تھے۔

2۔ بکری چرتے چرتے کہاں آنکلی؟

ج: بکری چرتے چرتے ایک ندی کے کنارے آنکلی۔

3۔ بکری نے گائے کو دیکھ کر سب سے پہلے کیا کیا؟

ج: بکری نے گائے کو دیکھا تو سب سے پہلے اس کو جھک کر سلام کیا۔

4۔ اس نظم سے ہمیں کیا سبق ملتا ہے؟

ج: اس نظم سے ہمیں بہت سے اسباق حاصل ہوتے ہیں۔ ایک تو یہ انسان اشرف المخلوقات ہے۔ وہ انسانون کے ساتھ ساتھ جانوروں کا بھی خیال رکھتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ سبق ملتا ہے کہ کسی کا شکوہ کرنے سے پہلے اس کے احسانات کو نظر میں رکھنا چاہیے۔ پھر یہ سبق ملتا ہے کہ چھوٹایا بڑا اگر وہ صحیح بات کہہ رہا ہے تو ہمیں چاہیے کہ اس کی بات مان لیں۔

5۔ اس نظم کے شاعر کا نام لکھیں؟

ج: اس نظم کے شاعر کا نام ڈاکٹر علامہ محمد اقبالؒ ہے۔

س3۔ مناسب الفاظ کی مدد سے خالی جگہوں کو پر کریں۔

1۔ دودھ کم دوں تو۔۔۔۔ ہے۔

2۔ چراگہ۔۔۔۔۔ تھی۔

3۔ میرے اللہ ! تیری ۔۔۔۔۔ ہے۔

4۔ ہم پہ۔۔۔۔۔۔ ہے بڑا اس کا۔

5۔ ایسی خوشیاں ہمیں۔۔۔۔۔ کہاں۔

جوابات: (1-بڑبڑاتا)(2-ہری بھری)(3-دہائی)(4-احسان)(5-نصیب)

باب 22۔ احمد کی سمجھداری

س1- ذیل میں دیے گئے بیانات میں ہر بیان کے نیچے چار ممکنہ جوابات دیے گئے ہیں۔درست جواب کے گرد دائرہ لگائیں۔                      
احمد طالب علم ہے؟ 1.
بارھویں جماعت کا (د) دسویں جماعت کا (ج) آٹھویں جماعت کا (ب) پانچویں جماعت کا (الف)
احمد جاننا چاہتا تھا کہ لفظ کا کیا مطلب ہے؟ 2.
دہشت گرد (د) لٹیرا (ج) ڈاکو (ب) ملک دشمن (الف)
احمد اسکول جانے کے لئے گھر سے نکلتا تو رک جاتا ؟ 3.
ایک اخبار والے کے پاس (د) پان فروش کے پاس (ج) ایک ریڑھی کے پاس (ب) ایک مکان کے پاس (الف)
احمد نے مکان کے دروازے پر ہمیشہ دیکھا تھا؟ 4.
ایک خوانچہ فروش (د) ایک کتا بیٹھا ہوا (ج) تالا لگا ہوا (ب) ایک چوکیدار (الف)
احمد کو ابو جان نے کال ملائی؟ 5.
117 پر (د) 15پر (ج) 17پر (ب) 1122 پر (الف)
احمد کی اطلاع پر دہشت گرد گرفتار ہوئے؟ 6.
12 (د) 10 (ج) 7 (ب) 5 (الف)
احمد کے ابو نے احمد سے کہا کہ یہ کارنامہ ہے؟ 7.
تمھارے دوست کا (د) پولیس کا (ج) تمھارا (ب) میرا (الف)

 

جوابات: (1-ج)(2-د)(3-الف)(4-ب)(5-ج) (6-الف)(7-ب)

س2۔ مناسب الفاظ کی مدد سے خالی جگہ پر کریں۔

1۔ ہمیں۔۔۔۔۔کھلونے اور بیگ سے دور رہنا چاہیے۔

2۔ محلے میں آنے والے نئے شخص کی ۔۔۔۔۔سرگرمی پر نظر رکھیں۔

3۔ ہمیں انسانیت کے۔۔۔۔۔۔کا خاتمہ کرنا ہے۔

4۔ کسی پر اسرار سرگرمی کی فوری اطلاع ۔۔۔۔۔۔پر دینا چاہیے۔

جوابات: (1-لاوارث)(2-غیر معمولی)(3-دشمن)(4-1717)

کا نشان لگائیں۔Oاور غلط جملے کے سامنے Pس3۔ درست جملے کے سامنے

O احمد پانچویں جماعت کا طالب علم تھا۔ الف
P ہمیں اپنے اردگرد کی خبر رکھنا چاہیے۔ ب
P سمجھ داری سے کام لینے سے انسانیت کے دشمنوں کا خاتمہ ہو سکتا ہے۔ ج
O ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ اپنے محلے کی حفاظت نہ کریں۔ د
P بم دھماکے کی صورت میں ہمیں ڈرنا نہیں چاہیے۔ ہ

س4۔ درج ذیل الفاظ کی مدد سے ایسے جملے بنائیں جو ان کا مفہوم واضح کردیں۔

جملے الفاظ
میں صبح سے ایک اُلجھن میں پھنسا ہواہوں۔ اُلجھن
ایمن نے امتحان میں غیر معمولی کا میابی حاصل کی۔ غیر معمولی
تم محنت نہیں کرتے مجھے خدشہ ہے کہ تم فیل ہو جاؤگے۔ خدشہ
سانپ کو سامنے دیکھ کر دیہاتی ایک دم ٹھٹک گیا۔ ٹھٹک
احمد کی نشان دہی پر دہشت گرد پکڑے گئے۔ دہشت گرد

س5۔ سبق کے متن کو سامنے رکھ کر درج ذیل سوالات کے مختصر جوابات دیں۔

1۔ احمد کیوں پریشان رہتا تھا؟

ج۔احمد روزانہ اخبار پڑھتا تھا اور اس میں موجود دہشت گردی کی خبروں کو دیکھ کر پریشان ہو جاتا تھا۔

2۔ ایک شہری کی  کیاذمہ داریاں ہیں؟

ج۔ ایک شہری کی ذمہ داریاں ہیں کہ وہ اپنے گرد وپیش پر نظررکھے۔ کہیں کوئی غیر معمولی سرگرمی دیکھیں تو اس کے بارے میں فوری طور پر پولیس کو اطلاع دیں۔

3۔ پُر اسرار مکان میں کس قسم کی سرگرمیاں ہوتی  تھیں؟

ج۔ پُر اسرار مکان غیر معمولی سرگرمیوں کا مرکز تھا۔ وہاں لوگ چوری چھپے آتے تھے اور وہاں بیٹھ کر شہر میں دہشت گردی کی واردات کا منصوبہ بنارہے تھے۔

4۔ احمد کے ابو نے کس نمبر پر اطلاع دی؟

ج۔ جب احمد کے ابو کو غیر معمولی سرگرمیوں کے بارے میں پتہ چلا تو انہوں نے فوری طور پر 15 پر اطلاع دی۔

5۔ انسانیت کے دُشمن کا خاتمہ کیسے ممکن ہے؟

ج۔ اگر سارے بچے اپنے گردوپیش کی خبر رکھیں اور سمجھ داری سے کام لیں تو انسانیت کے دشمنوں کا خاتمہ ہوسکتا ہے۔

ختم شد

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.