دو دوست، دو دشمن / اتفاق میں برکت ہے۔/ اتحاد میں طاقت ہے۔/ ایک چوہے اور مینڈک کی دوستی KAHANI /قصہ

دو دوست، دو دشمن / اتفاق میں برکت ہے۔/

اتحاد میں طاقت ہے۔/ ایک چوہے اور مینڈک کی دوستی

گھنے جنگل میں ایک دلدل کے قریب برسوں سے ایک چوہا اور ایک مینڈک رہتے تھے۔ بات چیت کے دوران ایک دن مینڈک نے چوہے سے کہا، “یہ دلدل مجھے باپ دادا سے ملی ہے، میری میراث ہے۔” چوہے نے کہا، “میرا خاندان بھی یہاں سینکڑوں سالوں سے آباد ہے اور یہ میری میراث ہے۔” یہ سن کر مینڈک غصے میں آ گیا اور تو تو میں میں شروع ہو گئی۔ بات اتنی بڑھی کہ ان کی دوستی میں فرق آ گیا اور دونوں نے ایک دوسرے سے بولنا چھوڑ دیا۔ ایک دن صبح ہی صبح ایک طرف سے چوہا نکلا۔دوسری طرف سے مینڈک آگے بڑھا۔ دونوں گتھم گتھا ہو گئے۔ ابھی یہ لڑائی جاری تھی کہ دور ہوا میں اڑتی ہوئی ایک چیل تیزی سے اڑتی ہوئی نیچے آئی اور ایک جھپٹے میں دونوں پہلوانوں کو اپنے تیز، نوکیلے پنجوں میں دبا کر لے گئی۔ اب وہاں چوہا ہے نہ مینڈک۔

اخلاقی سبق:

اتفاق میں برکت ہے

اتحاد میں طاقت ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.