کہانی :جیسا کرو گے ویسا بھرو گے یا کچھوے اور بچھو کی کہانی یا فطرت کبھی نہیں بدلتی یا جیسی کرنی ویسی بھرنی

کہانی :جیسا کرو گے ویسا بھرو گے یا  کچھوے اور بچھو کی کہانی  یا فطرت کبھی نہیں بدلتی یا جیسی کرنی ویسی بھرنی

              ایک دفعہ کا ذکر ہے کہ ایک کچھوے اور بچھو میں بہت دوستی تھی۔ایک دن بچھو  کچھوے کی پیٹھ پر بیٹھ کر ندی پار کر رہا تھا۔ راستے میں بچھو نے کچھوے کی پیٹھ پر ڈنک مارا۔کچھوے نے پوچھا یہ کیا کررہے ہو؟ بچھو نے کہا یہ میری عادت ہے کہ میں ہر کسی کو ڈنک مارتا ہوں۔

                  کچھوے نے غوطہ لگایا۔ بچھو نے  کہا یار ایسامت کرو ،میں ڈوب رہا ہوں۔ کچھوے نے کہا پانی میں نہانا میری عادت ہے۔ اس نے لمبا غوطہ لگایا اور بچھو ڈوب گیا۔

اخلاقی سبق:

                     جیسا کرو گے ویسا بھرو گے۔ یا جیسی کرنی ویسی بھرنی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.